ایم پی: ستنا سے اغوا کر جڑواں بھائیوں کا قتل، 12 دن بعد برآمد ہوئی لاش

Share Article
madhya-pardesh
بھوپال: مدھیہ پردیش کے ستنا میں اسکول بس سے اغوا کئے گئے جڑواں بچوں کا اغوا کر کے قتل کا سنسنی خیز معاملہ سامنے آیا ہے۔دونوں بچوں کی لاشیں 12 دن بعد برآمد کی گئی ہیں۔ پولیس نے تصدیق کر دی ہے۔ اغوا کاروں نے اغوا کرنے کچھ دن بعد ہی بچوں کا قتل کر دیا تھا۔ پولیس نے بچوں کی لاشیں یوپی کے باندہ سے برآمد کی ہے۔ اغوا شدہ بچوں کے نام دیویانش اور پریانش ہیں۔ اغوا کاروں نے بچوں کے بدلے 20 لاکھ روپے کا تاوان بھی لیا تھا، لیکن اس کے باوجودبھی اغوا کاروں نے بچوں کا قتل کر دیااور ان کی لاش جمنا میں پھینک دیے۔
madhya-pardesh-1
ستنا پولیس نے 6 اغوا کاروں کو گرفتار کر لیا ہے۔ اغوا شدہ بچوں کو 12 فروری کو ستنا میں ایک اسکول بس سے اغوا کیا گیا تھا۔ تفتیش میں اغوا کاروں نے بتایا کہ وہ بچوں کو مارنا نہیں چاہتے تھے، مگر جب اغوا کاروں نے بچوں سے پوچھا کہ کیا ہمیں پہچان لو گے اس پر بچوں نے ہاں کہا، اسی کے بعد اغوا کاروں نے دونوں بچوں کے ہاتھ پیر باندھ کر جمنا میں پھینک دیا۔
پولیس نے دونوں بچوں کی موت کی تصدیق کر دی ہے۔ اغوا کے 12 دن گزر جانے کے بعد بھی بچوں کا پتہ لگانے میں ناکام رہی مدھیہ پردیش پولیس کی بڑی ناکامی سامنے آئی ہے۔ مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ کمل ناتھ نے بھی معاملے میں نوٹس لیا تھا۔ سی ایم نے ڈی جی پی وی کے سنگھ سے پورے معاملے کی رپورٹ طلب کی تھی اور اغوا کاروں کو جلد گرفتار کرنے کے ہدایت دی ہے۔حالانکہ ابھی یہ نہیں بتایا گیا کہ بچوں کے اغوا کے پیچھے کس کا ہاتھ تھا اور تاوان میں کتنے پیسے دیے گئے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *