خواتین نے چڑھایابہار کا سیاسی پارہ

Share Article

سروج سنگھ
بہار کی انتخابی جنگ میں ہرشخص اپنی طاقت آزمانے کے لیے سڑکوں پر اتر چکا ہے۔ پالیسی سازی کا کام ختم کر کے آمنے سامنے کی لڑائی کے لیے خم ٹھونکے جارہے ہیں۔ ہر پارٹی عام لوگوں کو یہ بتانے میں لگی ہوئی ہے کہ ہم سے بڑا آپ کا ہمدرد کوئی نہیں۔ اس بار ہر پارٹی کی خاتون یونٹس نے بھی کافی بڑھ چڑھ کر اپنا رول تلاش کیا ہے اور یہ کوشش کر رہی ہیںکہ ان کی پارٹی تو جیتے ہی، ساتھ ہی ساتھ زیادہ سے زیادہ خاتون امیدوار اسمبلی تک پہنچ جائیں۔ دارالحکومت پٹنہ سے لے کر دور درازکے گاؤوں تک خاتون یونٹس کی لیڈران و کارکنان کی فوج اپنی اپنی پارٹی کے نعرے بلند کر رہی ہیں۔ راجیہ سبھا میں خواتین ریزرویشن بل پاس ہونے کے بعد ان کی کوشش ہے کہ اسمبلی میں خواتین کو ان کا واجب حق ملے۔ خواتین کو ٹکٹوں کی تقسیم میں کتنا حصہ ملے گا، اس پر سبھی پارٹیوں کی خاتون یونٹس کی صدور کی رائے تقریباً ایک جیسی ہے کہ 33فیصد سے کم نہیں مانگیںگے۔ لیکن اس کے ساتھ وہ یہ بھی کہتی ہیں کہ جو بھی ملے گا اسے قبول کر کے انتخابی اکھاڑے میں کود پڑیںگے۔
جنتا دل یونائیٹڈ کی خاتون یونٹ کی چیف اوشا سنہا کا خیال ہے کہ اس انتخاب میں خواتین کی طاقت فیصلہ کن رول ادا کرے گی۔ پارٹی کو مضبوط کرنے کے لیے تقریباًپورے اضلاع کا دورہ کر چکیں اوشا سنہا کو امید ہے کہ گزشتہ انتخابات کے مقابلہ اس بار خواتین میں جوش و خروش کہیں زیادہ ہے۔ راجیہ سبھا میں خواتین بل پاس ہونے کے بعد سے خواتین کو امید ہے کہ ریاست میں بھی ان کی حصہ داری بڑھنے والی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ جلسے جلوس میں ان کی آواز زیادہ گونج رہی ہے۔ جنتا دل یونائیٹڈ کے سیاسی جلسوں میں خاتون مورچہ نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیاہے۔ اوشا سنہا کا دعویٰ ہے کہ لوگ نتیش کو پسند کرتے ہیں اس لیے آئندہ کی حکومت بھی جنتا دل یونائیٹڈ اور بی جے پی اتحاد کی ہی ہوگی۔ لیکن لوک جن شکتی پارٹی کی خاتون یونٹ کی چیف ڈاکٹر للتا دیوی یادو کا کہنا ہے کہ بہار کے لوگوں نے نتیش کمار کو اچھی طرح پہچان لیا ہے۔ گزشتہ پانچ برسوں میں عوام کو ٹھگنے والی یہ سرکار اب بس جانے ہی والی ہے۔ لوک جن شکتی پارٹی کی خواتین نتیش سرکار کے گھوٹالے سے عوام کو آگاہ کرانے کے لیے دن رات گاؤوں میں گھوم رہی ہیں۔ اس ریاست میں خواتین پر ظلم و جبر کافی بڑھا ہے خاص کر دلت خواتین کی پریشانیوں میں کافی اضافہ ہواہے۔ للتا دیوی نے رام ولاس پاسوان سے خواتین کے لیے زیادہ سے زیادہ ٹکٹ دینے کی اپیل کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ نتیش سرکار کو اکھاڑ پھینکنے میں لوک جن شکتی پارٹی کی خاتون یونٹ کوئی موقع نہیں ضائع کرے گی۔ انتخابی تیاری کے سلسلے میں للتا دیوی اپنی ٹیم کے ساتھ مختلف اضلاع کا دورہ کر رہی ہیں۔ عوام کا مزاج بھانپتے ہوئے للتا دیوی اس نتیجے پر پہنچی ہیں کہ بہار میں آئندہ حکومت لوک جن شکتی پارٹی -راشٹریہ جنتا دل اتحاد کی بننے والی ہے۔ لیکن اگر بی جے پی خاتون مورچہ کی چیف ہیم لتا ورما کی بات کریں تو ان کا خیال ہے کہ بہار کے عوام ایک بار پھر بی جے پی -جنتا دل یونائیٹڈ اتحاد کو موقع دینے والے ہیں۔ ہیم لتا ورما کہتی ہیں کہ میں آپ کو پوری ذمہ داری سے بتا رہی ہوں کہ بہار کے لوگ کیا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ترقی ہمارا خاص ایشو رہے گا کیوں کہ بہار کے عوام اسے پسند کرتے ہیں۔ ہیم لتا ورما نے کہا کہ بی جے پی-جنتا دل یونائیٹڈ کی اتحادی حکومت میں خواتین کو عزت ملی ہے، ان کے دلوں سے خوف دور ہوا ہے اور آج وہ پوری آزادی کے ساتھ اپنے فرائض کی تکمیل کر رہی ہیں۔ دیر رات تک خواتین رات میں بھی بازار میں گھومیں ،پانچ برس پہلے کوئی ایسا سوچ بھی نہیں سکتا تھا، لیکن اس سرکار نے خوف کے ماحول کو ختم کر کے خواتین کو جینے کی آزادی دی ہے۔ انتخاب کے لیے بی جے پی سے جڑی خواتین نے کمر کس لی ہے اور امید ہے کہ اس بار بی جے پی کی زیادہ سے زیادہ خاتون امیدوار انتخاب جیت کر اسمبلی پہنچیںگی۔ راشٹر وادی کانگریس پارٹی کی خاتون یونٹ کی چیف نیتو سنگھ کا خیال ہے کہ نتیش سرکار ہر موڑ پر ناکام رہی ہے اور آئندہ انتخاب میں عوام جنتا دل یونائیٹڈ- بی جے پی اتحاد کو سبق سکھائیںگے۔ اپنی پارٹی کی انتخابی تیاریوں کے متعلق ان کا کہنا ہے کہ این سی پی کی خاتون یونٹ اس بار پوری قوت کے ساتھ انتخابی اکھاڑے میں اترنے والی ہے۔ ہم لوگ اس بار دکھا دیںگے کہ خواتین کی طاقت کیا ہوتی ہے۔ این سی پی خواتین کا پورا خیال رکھے گی اور کوشش کرے گی کہ بہار کی غریب سے غریب خاتون کو بھی اس کا واجب حق ملے۔ کانگریس کی خاتون یونٹ کی چیف ونیتا وجے دو ٹوک کہتی ہیں کہ تمام پارٹیوں کی لڑائی کانگریس کے ساتھ ہے۔ بہار کے عوام چاہتے ہیں کہ یہاں کانگریس کی حکومت بنے تاکہ صحیح معنوں میں ترقی کی گاڑی آگے بڑھ سکے۔ ونیتا وجے کا خیال ہے کہ کانگریس نے جو عزت خواتین کو دی، اسے دینے کے بارے میں کوئی پارٹی سوچ بھی نہیں سکتی ہے۔ سونیا گاندھی نے راجیہ سبھا میں خواتین بل کو پاس کراکے یہ بتا دیا کہ کانگریس ہی خواتین کی سچی ہمدرد ہے۔ پٹنہ میں پوری ریاست کی خواتین کے کامیاب اجلاس سے پرجوش ونیتا وجے کا دعویٰ ہے کہ اس بار ریاست میں کانگریس کی حکومت بنے گی اور پارٹی کی خاتون یونٹ اس میں اہم رول ادا کرے گی۔ ونیتا وجے کا کہنا ہے کہ ریاست کے لوگ نتیش کی سچائی جان چکے ہیں، اس لیے اب وہ انہیں دوبارہ موقع نہیں دینا چاہتے۔ پورے بہار میں سونیا اورراہل گاندھی کے تئیں زبردست کشش ہے۔ لوگ انہیں دیکھنا و سننا چاہتے ہیں، لیکن راشٹریہ جنتا دل کی خاتون یونٹ کی چیف بھارتی شریواستو کا کہنا ہے کہ کانگریس انتخاب میں ووٹ کاٹنے کا کردار نبھائے گی۔ کانگریس کے لیڈر ہوا میں بات کر رہے ہیں۔ جہاں تک مقبولیت کا سوال ہے تو آج بھی اس معاملے میں لالو پرساد کو کوئی نہیں پیچھے کرسکتا۔ بہار کے لوگ نتیش سے اپنے آپ کو ٹھگا ہوا محسوس کر رہے ہیں۔ نتیش کمار امیروں کی بات سنتے ہیں جب کہ لالو پرساد غریبوں کا درد سمجھتے ہیں۔ راشریہ جنتا دل کی خاتون یونٹ اس بار انتخاب میں بہار کے عوام سے یہ کہے گی کہ پانچ برس پہلے آپ نے نتیش کمار کو منتخب کر کے جو غلطی کی تھی اسے مت دہرائیے اور اس بار راشٹریہ جنتا دل-لوک جن شکتی پارٹی اتحاد کی سرکار بنوائیے۔ لالو پرساد و رام ولاس پاسوان ہر قیمت پر خواتین کی عزت کا تحفظ کریںگے۔ ان کا کہنا ہے کہ غلط پروپیگنڈہ کر کے راشٹریہ جنتا دل کی شبیہ کو خراب کیا گیا ، لیکن عوام سچائی جان چکے ہیں۔ ان واردات سے تو یہی بات سمجھ میںآتی ہے کہ تقریباً تمام پارٹیوں کی خاتون یونٹس نے انتخابی اکھاڑے میں چھلانگ لگا دی ہے اور ان کی پوری کوشش اپنی پارٹی کی جیت میں اہم کردار ادا کرنا ہے۔ راجیہ سبھا میں خاتون بل کے پاس ہونے سے ان کا بھروسہ بڑھا ہے اور اس بار کے انتخاب میں ان کی پوری کوشش ٹکٹوں میں زیادہ سے زیادہ حصہ داری حاصل کر کے اسمبلی انتخابات میں دستک دینے کی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *