سابق فوجی سربراہ اور وزیر خارجہ وی کے سنگھ کا اپنے ہی حکومت کے خلاف بڑا بیان:’ 2012 کے بعد سے جنوبی کشمیر میں حالات بگڑے

Share Article

V-K-Singh

نئی دہلی: 2012 کے بعد سے جنوبی کشمیر میں حالات بگڑے ہیں، یہ کہہ کر مودی حکومت میں امور خارجہ کے ریاستی وزیراور سابق فوجی سربراہ جنرل وی کے سنگھ نے اپنی ہی حکومت پر سوال کھڑے کر دیے ہیں۔ سابق فوجی سربراہ جنرل وی کے سنگھ نے اپنے مدت کار پر کشمیر میں دہشت گردی کو لے کر بڑا بیان دیا ہے۔ ان کے اس بیان سے مودی حکومت پر ہی سوال کھڑے ہوگئے ہیں۔ جنرل وی کے سنگھ نے کہا ہے کہ سال 2012 کے بعد سے جنوبی کشمیر میں حالات بگڑے ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ اس پر غور کرنا چاہئے کہ ایسا کیوں ہوا۔جنرل وی کے سنگھ نے کہا، ’ اس بات کا تجزیہ ہونا چاہئے کہ 2012 کے بعد جنوبی کشمیر میں حالات کیوں خراب ہوئے۔‘ وی کے سنگھ نے یہ بھی کہا ہے کہ جنوبی کشمیر میں 2005 سے 2012 تک حالات پرسکون تھے، یعنی حالت تب بگڑے جب مودی حکومت اقتدار میں آئی اور وادی کے مسئلے کو صحیح سے سنبھال نہیں پائی۔جنرل کے مطابق، جنوبی کشمیر میں پہلے اتحاد میں رہی بی جے پی۔پی ڈی پی حکومت کو اس پر جواب دینا چاہئے۔ وی کے سنگھ نے کہا، ’ جب مخلوط حکومت آئی تب ایک پارٹی کو وادی میں مزید حمایت ملی، دوسرے کو جموں میں مزید حمایت ملی۔‘ انہوں نے کہا، ’ جنہیں وادی میں حمایت حاصل تھی ان کی پالیسیوں کا تجزیہ کرنا ضروری ہے۔ یہ دیکھا جانا چاہئے کہ کیا پالیسیاں ایک جامع ناکامی تھی یا کچھ کی غلطیوں نے دہشت گردوں کو فروغ دیا۔‘
جنرل یہیں نہیں رکے ان کا کہنا ہے کہ،کشمیر مسئلہ آسان نہیں ہے، یہ پراکسی جنگ کا مسئلہ ہے، یہ ایک مسئلہ ہے جو کسی واقعہ پر مبنی پالیسی کی کامیابی یا ناکامی کو نہیں ظاہر کرتا۔ تصادم میں ایک اہلکار اور تین جوان شہید ہو گئے۔ اس کا مطلب یہ نہیں کہ حالات خراب ہے۔ ‘

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *