کرناٹک :کانگریس کے لئے اچھی خبر، ڈی کے شیو کمار بولے- ناراض ہمارے ساتھ رہیں گے

Share Article

 

کرناٹک میں باغی ممبران اسمبلی کو منانے میں مصروف کانگریس کو بڑی کامیابی ملی ہے۔ رپورٹ کے مطابق استعفیٰ دینے والے کانگریس ممبر اسمبلی کی نارضگی اپنے استعفیٰ پر نظر ثانی کے لیے تیار ہو گئے ہیں۔ ہفتے کی صبح کرناٹک سرکار کے وزیر ڈی شیو کمار اور ڈپٹی سی ایم جی خود ناراض کو منانے پہنچے۔ناراض سے ملاقات کے بعد ڈی شیو کمار نے دعوی کیا کہ ناراض اپنے استعفیٰ پر پھر سے سوچنے کے لیے تیار ہو گئے ہیں۔

ادھر ممبر اسمبلی ناراض نے کہا ہے کہ انہوں نے پارٹی قیادت سے اداس اور دکھی ہوکر استعفیٰ دیا تھا، لیکن اب پارٹی رہنماؤں کے سامنے اپنا موقف رکھنے کے بعد وہ اپنے فیصلے پر دوبارہ سوچیں گے۔ناراض نے کہا کہ وہ استعفیٰ دینے والے دوسرے رکن اسمبلی کے سدھاکر سے بھی بات کریں گے۔ بدھ (11 جولائی) کو ممبر اسمبلی MTB کی ناراضگی اور کے سدھاکر راؤ نے استعفیٰ دیا تھا۔

ڈی شیو کمار سے ملاقات کے بعد کانگریس ممبر اسمبلی MTB کی ناراض نے کہا، “حالات ایسے ہو گئے تھے کہ ہمیں اپنا استعفیٰ دینا پڑا تھا، لیکن اب ڈی شیو کمار اور دوسرے لیڈر ہمارے پاس آئے ہیں اور ہم درخواست کی ہے کہ ہم اپنا استعفیٰ واپس لے لیں ، میں سدھاکر راؤ سے بات کروں گا پھر دیکھتے ہیں کیا کیا جا سکتا ہے، آخر کار همنا کئی دہائیوں سے کانگریس میں گزارے ہیں۔ناراضنے کہا کہ انہوں نے سابق وزیر اعلی سددھارمیا سے فون پر بات کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ جلد ہی اپنا فیصلہ بتائیں گے۔

کانگریس کے باغی ممبران اسمبلی کو منا رہے ڈی شیو کمار نے ناراض سے ملاقات کے بعد کہا کہ ہمیں ساتھ رہنے اور ساتھ مرنا چاہئے کیونکہ ہم نے 40 سال تک کانگریس پارٹی کے لئے کام کیا ہے۔ ڈی شیو کمار نے کہا، “ہر خاندان میں اتار چڑھاؤ ہوتا ہے،ہمیں سب کچھ بھولاكر آگے بڑھنے چاہئے، ہمیں خوشی ہے کہ ایم ٹی وی ناراض نے ہمیں یقین دلایا ہے کہ وہ ہمارے ساتھ رہیں گے۔ “بتا دیں کہ کانگریس کے 79 ممبران اسمبلی میں سے 13 نے اس وقت استعفیٰ دے دیا ہے۔ اس کے بعد کرناٹک کی جےڈيےس- کانگریس حکومت پر خطرہ منڈلا رہا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *