کمل ہاسن کا بڑا بیان: آزاد ہندوستان کا پہلا دہشت گرد ہندو ہی تھا، نام تھا ناتھورام گوڈسے

Share Article

 

تمل ناڈو میں ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کمل ہاسن نے یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ یہاں پر مسلمان موجود ہیں، میں اس لیے ایسا نہیں بول رہا ہوں۔ لیکن آزاد ہندوستان میں پہلا دہشت گرد ہندو ہی تھا، جو کہ ناتھورام گوڈسے تھا۔
لوک سبھا انتخابات کے درمیان ہندو، ہندوتو اور ہندو دہشت گردی کے مسئلے پر چل رہی بڑی بحث کے درمیان ایک اور بیان آیا ہے، جو اس بحث کو نئی ہوا دے سکتا ہے۔ ساؤتھ کے سپر اسٹار اور حال ہی میں لیڈر بنے کمل ہاسن نے اپنی ایک اجتماع میں کہا کہ آزاد ہندوستان کا پہلا دہشت گرد ہندو ہی تھا اور وہ تھا ناتھورام گوڈسے۔

 

Image result for kamal haasan speech

تمل ناڈو کے ARIVAKURICHI میں ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کمل ہاسن نے یہ بات کہی. انہوں نے کہا، ‘یہاں پر مسلمان موجود ہیں، میں اس لیے ایسا نہیں بول رہا ہوں. لیکن آزاد ہندوستان میں پہلا دہشت گرد ہندو ہی تھا، جو کہ ناتھورام گوڈسے تھا. ‘
مكل نيدھی ميام کے سربراہ کمل ہاسن نے کہا کہ اس کی شروعات تبھی ہوئی تھی، جب ناتھو رام گوڈسے نے مہاتما گاندھی کے قتل کی تھی۔ کمل ہاسن، ARIVAKURICHI میں ہونے والے ضمنی انتخابات کے لئے تشہیر کر رہے تھے. جس وقت کمل ہاسن نے یہ بیان دیا. اس دوران ان کے امیدوار ایس. موهنراج بھی موجود تھے۔

 

اس انتخاب میں انتہائی پر رہا ہندو دہشت گردی کا مسئلہ
غور طلب ہے کہ اس الیکشن میں ہندو دہشت گردی کا مسئلہ اپنے عروج پر ہے. جب بھارتیہ جنتا پارٹی نے مدھیہ پردیش کی بھوپال لوک سبھا سیٹ سے مالیگاؤں دہشت گرد دھماکے کی ملزم سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کو ٹکٹ دیا، تو اپوزیشن پارٹیوں نے اس پر سوال کھڑے کر دیے.

 

اپوزیشن کے سوال اٹھانے کے باوجود بی جے پی اس معاملے پر جارحانہ ہی رہی. وزیر اعظم نریندر مودی، بی جے پی صدر امت شاہ سمیت پوری بی جے پی نے اس معاملے پر کانگریس کو گھیرا اور ان پر ہندوؤں کو ذلیل کرنے کا الزام لگایا. اتوار کو ہی اندور جلسہ عام میں مودی نے کہا کہ ان (کانگریس) لوگوں نے بھگوا پر دہشت گردی کا داغ لگایا ہے.

 

 

ناتھو رام گوڈسے پر بھی مسلسل ہوتا رہا تنازعہ
بابائے قوم مہاتما گاندھی کی گولی مار کر قتل کرنے والے ناتھورام گوڈسے پر بھی تنازعہ ہوتا رہا ہے. ملک کے کچھ حصوں میں ناتھورام کا مندر بھی ہے، جہاں اس کی عبادت کی جاتی ہے. تو وہیں کانگریس صدر راہل گاندھی RSS اور بی جے پی کو گوڈسے کے نظریات والا بتاتے رہے ہیں. اس معاملے پر RSS کی طرف ان پر ہتک عزت کا کیس بھی کیا جا چکا ہے.

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *