جموں میں بس اسٹینڈ پر گرینیڈ سے حملہ، 18 لوگ زخمی، پولیس ٹیم موقع پر پہنچی

Share Article

jammu-kashmir

جموں و کشمیر میں ایک بار پھر دھماکے کی خبر آئی ہے۔ جموں بس اسٹینڈ کے پاس ایک بڑا دھماکہ ہوا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ جموں میں بس اسٹینڈ پر گرینیڈ سے حملہ کیا گیا ہے اور اس میں اب تک 18 افراد کے زخمی ہونے کی بھی خبر ہے، حالانکہ دھماکوں کی وجوہات کا پتہ نہیں چل پایا ہے۔ زخمیوں کو اسپتال بھیجنے کا کام کیا جا رہا ہے۔ پولیس موقع پر پہنچ گئی ہے اور معاملے کی جانچ میں مصروف ہو گئی ہے۔ پولیس نے بتایا ہے کہ یہ گرینیڈ حملہ ہے۔حالانکہ یہ اب تک نہیں پتہ چل پایا ہے کہ اس حملے کے پیچھے کون ہے۔

وہیں پولیس اور سلامتی دستوں نے بس اڈے کو گھیر لیا ہے۔ زخمیوں کو اسپتال میں بھرتی کرایا گیا ہے۔آپ کو بتا دیں کہ 14 فروری کو پلوامہ میں ہوئے حملے کے بعد جموں میں الرٹ جاری تھا۔ جموں کے بھیڑ بھاڑ والے علاقوں میں کافی سیکورٹی تھی لیکن اس کے باوجود بس اڈے پر گرینیڈ دھماکہ ہو گیا۔

 

اس واقعہ کے بعد سیکورٹی نظام پر سوال اٹھائے جا رہے ہیں۔ ڈی جی سی آئی ایس ایف نے اطلاع دی ہے کہ سبھی یونٹوں کی سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ جموں کے آئی جی ایم کے سنہا نے بتایا کہ یہ ایک گرینیڈ دھماکہ ہے۔ ایسا لگ رہا ہے کہ کسی نے گرینیڈ کو بس کے نیچے پھینک دیا جس میں 18 لوگ زخمی ہو گئے۔ آئی جی نے کہا کہ وہ اس حملہ کی جانچ کر رہے ہیں اور جلد ہی اس حملہ کو انجام دینے والوں کو گرفتار کر لیا جائے گا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *