جیش محمد سرغنہ مولانا مسعود اظہر کی موت حقیقت یا افواہ، سامنے آئی پلوامہ حملے کے ماسٹرمائنڈ کے موت کی خبر

Share Article

masood-azha

جیش محمد سرغنہ مسدو اظہر کی موت ہو گئی ہے، لیکن ابھی تک اس کی سرکاری تصدیق نہیں ہوئی ہے۔ قیاس لگائی جا رہی ہیں جیش محمد سرغنہ انڈین ایئر فورس کی ایئر اسٹرائک میں مارا گیا۔ اگرچہ کچھ رپورٹیں میں مسعوو اظہر کی بیماری کی وجہ سے بھی موت ہونے کی بات کہی گئی ہے۔ خبر ہے کہ دہشت گرد تنظیم جیش محمد کے سرغنہ مسعود اظہر کی موت ہوگئی ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاعات کے مطابق وہ لیور کینسر میں مبتلا تھا اور اسلام آباد کے آرمی اسپتال میں اس کی دو مارچ کو ہی موت ہوگئی تھی۔ حالانکہ چوتھی دنیا اس خبر کی تصدیق نہیں کرتا ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ پاکستانی فوج کی اجازت کے بعد ہی مسعود اظہر کی موت کا سرکاری اعلان کیا جائے گا۔

حالانکہ جیش محمد یا پاکستان نے مسعود اظہر کی موت کی تصدیق نہیں کی ہے اور نہ ہی اس سلسلہ میں کوئی جانکاری دی ہے۔ خیال رہے کہ حال ہی میں سی این این کو دئے ایک انٹرویو میں پاکستان کے وزیر خارجہ محمود قریشی نے کہا تھا کہ جتنا میرے علم میں ہے ، وہ کافی بیمار ہے۔ وہ اتنا بیمار ہے کہ وہ گھر سے باہر بھی نہیں جاسکتا ہے۔

وزیر خارجہ نے دعویٰ کیا تھا کہ جیش محمد نے پلوامہ دہشت گردانہ حملے کی ذمہ داری نہیں لی ہے۔ وہیں ریٹائرڈ کرنل آشیش کھنہ نے کہا کہ ہوسکتا ہے کہ مسعود اظہر ائیراسٹرائیک میں ہی زخمی ہوا ہو اور اسی کیمپ میں رہا ہو جہاں اسٹرئیک کی گئی تھی اور اب علاج کے دوران مرگیا ہو ، لیکن پاکستان اس بات کو بھی چھپانا چاہتا ہوگا۔

خیال رہے کہ مسعود اظہر ہندوستان کا موسٹ وانٹیڈ دہشت گرد تھا۔ اس پر پٹھان کوٹ ائیربیس پر ہوئے دہشت گردانہ حملہ کی سازش کا الزام ہے۔ ہندوستان سمیت یو ایس ، یو کے اور فرانس جیسے ممالک مسلسل مطالبہ کررہے ہیں کہ مسعود اظہر کو اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل عالمی دہشت گرد قرار دے، حالانکہ چین اس راہ میں روڑہ بنا ہوا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *