اسرائیل کا ناکامی کے باوجود چاند پر قدم رکھنے کا نیا منصوبہ

Share Article

 

 

اسرائیل کے ناکام خلائی مشن کی ذمہ دار فضائی کمپنی نے سرکاری اور نجی فنڈز کی مدد سے چاند پر قدم رکھنے کے لیے دوبارہ منصوبہ بندی کا اعلان کردیا۔خیال رہے کہ سرکاری کمپنی اسرائیلی ایرواسپین انڈسٹریز (آئی اے آئی) اور غیر منافع بخش کمپنی اسپیس آئی ایل کی جانب سے تیارہ کردہ روبوٹ کرافٹ بریشیٹ دو روز قبل اپنے مشن کے دوران تباہ ہوگیا تھا جس کے بعد اسرائیل کا چاند پر قدم رکھنے والا تیسرا ملک بننے کا خواب دھرا رہ گیا تھا۔خبر ایجنسی رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق اسپیس آئی ایل کے صدر مورس کیہن کا کہنا تھا کہ ‘چھٹی کے دنوں میں میرے پاس سوچنے کا وقت تھا جس دوران مجھے حوصلے کا موقع ملا اور عوام کی جانب سے تعاون بھی حاصل رہا’۔ ان کا کہنا تھا کہ ‘میں آج نئے منصوبے بریشیٹ ٹو کا اعلان کررہا ہوں’۔

 

Image result for Israel's new plan to step on the moon, despite failure

 

انہوں نے کہا کہ پہلے مشن میں تقریباً 100 ملین ڈالر کا خرچہ آیا تھا جس میں زیادہ تر حصہ مورس کیہن جیسے کئی نجی افراد نے ڈالا تھا۔مورس کا کہنا تھا کہ اس مشن میں اسرائیلی حکومت کا حصہ صرف 30 لاکھ ڈالر تھا اور اب ڈونر دوبارہ نئے منصوبے کے لیے بھی فنڈنگ کریں گے لیکن سرکاری پیسہ اسرائیلی عوام کے منصوبے کے لیے ہونا چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہ ‘ہم سرکاری پیسے پر انحصار نہیں کریں گے’۔مورس کیہن نے کہا کہ بریشیٹ ٹو کی ٹاسک فورس جلد کام شروع کرے گی اور ‘ہم ایسا کام شروع کریں گے جس کو مکمل کریں اور چاند پر ہم اپنا جھنڈا لہرا سکیں’۔واضح رہے کہ اب تک صرف تین ممالک امریکہ، روس اور چین ایسے ہیں جو چاند تک پہنچنے میں کامیاب ہوچکے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *