بھارت میں کھپت کے مقابلے میں پٹرولیم ایندھن کی کم پیداوار کی وجہ سے دیگر ممالک سے اس کی درآمدات کرنی پڑتی ہے۔ لہٰذا، عراق نے دوسرے سال بھی ہندوستان کو خام تیل کی سب سے زیادہ فراہمی کی ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق عراق نے اپریل 2018 سے مارچ 2019 کے درمیان بھارت کو 4.66 کروڑ ٹن خام تیل فروخت کیا ہے۔ اب خام تیل کی فراہمی میں سعودی عرب دوسرے اور ایران تیسرے مقام پرہے۔
کمرشل اطلاعات و شماریات ڈائریکٹوریٹ جنرل کے اعداد و شمار کے مطابق عراق نے اپریل 2018 سے مارچ 2019 کے دوران ہندوستان کو 4.66 کروڑ ٹن خام تیل فروخت کیا ہے۔ اگر اعداد و شمار پر غور کریں تو مالی سال 2017-18 کے 4.50 کروڑ ٹن کے مقابلے میں دو فیصد زیادہ ہے۔ بھارت نے ابتدائی طور پر 2018-19 میں 20.7 کروڑ ٹن خام تیل درآمد کیا۔
غور طلب ہے کہ سعودی عرب روایتی طور پر بھارت کو تیل سپلائی کرنے والے ممالک میں سرفہرست ہے لیکن 2017-18 میں پہلی بار عراق نے سعودی عرب کی یہ پوزیشن چھین لی تھی۔ سعودی عرب نے 2018-19 میں 4.03 کروڑ ٹن خام تیل کی برآمدات کی جو 2017-18 میں 3.61 کروڑ ٹن تیل برآمدات سے زیادہ ہے۔ ایران بھارت کو خام تیل کی فراہمی کرنے والا تیسرا سب سے بڑا ملک ہے۔ عراق اور امریکہ کے درمیان بنتے بگڑتے رشتوں کی وجہ سے بھارت نے فی الحال ایران سے خام تیل کی درآمدات پر روک سے دوری بنائی ہوئی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here