سرینگر: 70 ویں یوم جمہوریہ پر جب ملک میں جشن کا ماحول تھا، لوگ یوم جمہوریہ کے موقع پر خوشیاں منا رہے ہیں، لیکن اسی جشن کے ماحول میں رکاوٹ پیدا کرنے کے ارادے سے وادی کشمیر میں دہشت گردوں نے اپنی ناپاک کرتوتوں کو انجام دیا۔ ہفتہ کو یوم جمہوریہ پر بھی دہشت گردوں نے سیکورٹی فورسز پر حملے کئے، جس میں سی آر پی ایف کے پانچ جوان زخمی ہو گئے ہیں۔ جن کو پاس کے ہسپتال میں علاج چل رہا ہے۔
 
 
یوم جمہوریہ کے جشن میں خلل
وادی کشمیر میں 2 جگہوں پر دہشت گردانہ حملہ
دہشت گردوں نے SOG اور CRPF کیمپ کو پیدا نشانہ
حملے میں 2 دہشت گرد ہلاک، 5 نوجوان زخمی
 
دہشت گردوں نے وادی کشمیر میں پلوامہ کے پنپور اور كھانمو علاقے میں حملے کئے۔ دہشت گردوں نے SOG اور CRPF کیمپ کو نشانہ بنایا۔ اس کے بعد سیکورٹی فورسز نے دہشت گردوں کے خلاف جوابی کارروائی شروع کر دي۔ یوم جمہوریہ کی صبح تک جنوبی کشمیر کے پلوامہ میں دہشت گردوں اور سیکورٹی فورسز کے درمیان تصادم جاری رہی۔ خبر ہے کہ سیکورٹی فورسز نے دو دہشت گردوں کو مار گرایا ہے۔ان دہشت گردوں کی تعداد 3 سے 4 بتائی جا رہی تھی۔ یہ دہشت گرد جیش محمد دہشت گرد تنظیم کے بتائے جا رہے ہیں۔ یہ دہشت گرد یوم جمہوریہ پر کسی بڑی واردات کو انجام دینے کی تیاری میں تھے۔

 
اس سے پہلے جمعرات کو پاکستان نے پونچھ، راجوری سیکٹر اور سندربني سیکٹر سمیت لائن آف کنٹرول (LoC) سے ملحق چار مقامات پر جنگ بندی توڑا تھا۔ ان علاقوں میں سرحد پار سے اسمال آرمس سے فائرنگ کی گئی تھی اور موٹار سے گولے داغے گئے تھے۔ ہندوستانی فوج نے بھی پاکستان کی اس ناپاک حرکت کا معقول جواب دیا تھا۔ آپ کو بتا دیں کہ سرد موسم کا فائدہ اٹھا کر پاکستان بھارت میں دہشت گردوں کی دراندازی کرانے کی کوشش لگاتار کرتا رہا ہے۔ ساتھ ہی سيزفائر کا خلاف ورزی ہی اس لئے کیا جاتا ہے، تاکہ دہشت گردوں کو بھارت میں آسانی سے مداخلت کا موقع مل سکے۔ دراندازی کے بعد یہی دہشت گرد وادی کشمیر میں حملوں کو انجام دیتے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here