اسلامی بنیاد پرستی کے خلاف جنگ سے بھارت قابل: ٹرمپ

Share Article

وزیر اعظم نریندر مودی دیر شام یہاں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ سے ملے۔ دونوں رہنماؤں نے دو طرفہ، علاقائی اور عالمی مسائل سمیت تجارت اور سرمایہ کاری پر بھی تبادلہ خیال کیا۔اجلاس کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس میں مودی کا موازنہ ساٹھ کی دہائی کے امریکی راک اسٹار ایلوس سے کی اور انہیں اپنا بہترین دوست بتایا۔ ساتھ ہی کہا کہ بھارت اور امریکہ کے درمیان دو طرفہ تعلقات پہلے سے کہیں زیادہ مضبوط ہوئے ہیں۔ انہوں نے مبینہ طور پراسلامی دہشت گردی سے منسلک ایک سوال کے جواب میں کہا کہ بھارت اس سے نمٹنے کے قابل ہے۔مودی نے کہا کہ ٹرمپ نہ صرف ان کے ذاتی، بلکہ بھارت کے بھی اچھے دوست ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت امریکہ کے ساتھ معاہدہ کرنے جا رہا ہے جس سے آنے والی دہائی میں ملک میں ساٹھ ارب ڈالر کا امریکی سرمایہ کاری کریں گے اور پچاس ہزار ملازمتوں کی تخلیق ہوگی۔اگرچہ تجارتی تعطل میں دونوں ممالک کے رہنماؤں کے درمیان ملاقات نہیں ہو پائی کیونکہ اس مسئلے پر دونوں ممالک کے وزیر تجارت غور و فکر کر رہے ہیں۔ مودی اور ٹرمپ کے درمیان مشترکہ پریس کانفرنس کے بعد سیکرٹری خارجہ وجے گوکھلے نے صحافیوں سے کہا کہ دونوں رہنماؤں نے تجارت مسئلے پر بھی بحث کی، لیکن انہوں نے زیادہ معلومات دینے سے انکار کر دیا، کیونکہ اس مسئلے پر ابھی بات چیت چل رہی ہے۔ادھر، وائٹ ہاؤس نے ایک بیان جاری کر کے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے وزیر اعظم مودی سے پاکستان کے ساتھ تعلقات بہتر بنانے اور کشمیری عوام کا معیارزندگی بہتر کرنے کو کہا۔ واضح ہو کہ بھارت نے گزشتہ ماہ آئین کے آرٹیکل 370 کے دفعات کو ختم کرکے کشمیر کو ملی خود مختاری کو ختم کر دیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *