مدھیہ پردیش میں طلبہ سے بدفعلی، چلتی گاڑی میں درندوں نے کیا ریپ

Share Article

مدھیہ پردیش کے سنگرولی ضلع سے ایک چونکانے والی معاملہ سامنے آیا ہے۔ جہاں لفٹ دینے کے بہانے تین لوگوں نے ایک طلبہ سے بدفعلی کیا۔ اسکول کی شکایت پر پولیس نے ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے۔ پولیس کے ہتھے چڑھے ملزمان میں Northern Coalfields Ltd کا ایک ملازم بھی شامل ہے۔

ملی جانکاری کے مطابق واقعہ گزشتہ بدھ کی ہے۔ شکار طلبہ نے پولیس کو اپنی شکایت میں کہا کہ جب وہ اسکول جا رہی تھی تبھی تین لوگوں نے اسے لفٹ دینے کے بہانے ان کی گاڑی میں بٹھا لياجسكے بعد گاڑی میں بیٹھے دو افراد نے اس كلوروپھورم سنگھاكر بیہوش کر دیا اور پھر باری باری اس کا ریپ کیا۔ واقعہ کے بعد تینوں نے اسے سڑک پر پھینک دیا اور وہاں سے فرار ہوگئے۔

آبروریزی کی اس واردات کے بعد متاثرہ کسی طرح اپنے گھر پہنچی اور اہل خانہ کو حادثے کی جانكاري دی۔ جس کے بعد اہل خانہ نے پولیس میں معاملہ درج کرایا۔ متاثرہ کے اہل خانہ کی شکایت پر پولیس نے ملزمان کے خلاف تعزیرات ہند کی مختلف دفعات اور پاسکو ایکٹ کے تحت معاملہ درج کرتے ہوئے رگھونندن عرف ماموں، چراغ عرف دیپو بسوار اور ديپیندر عرف جیتو کو گرفتار کر لیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *