كلبھوشن جادھو پر ICJ کے فیصلے نے پاکستان کو ایک دو نہیں، دیئے پورے تین جھٹکے

Share Article
kulbhushan jadhav, kulbhushan jadhav verdict,kulbhushan,jadhav

 

بین الاقوامی عدالت نے كلبھوشن جادھو پر فیصلہ سناتے ہوئے پھانسی پر روک لگا دی ہے اور پاکستان کو اس پر نظر ثانی کرنے کے لئے کہا ہے۔ اب پاکستان كلبھوشن جادھو کو پھانسی نہیں دے سکتا ہے۔ بین الاقوامی کورٹ کے کل 16 ججوں میں سے 15 نے بھارت کے حق میں فیصلہ دیا ہے۔

بین الاقوامی کورٹ ICJ نے بھارتی کاروباری كلبھوشن جادھو پر اپنا فیصلہ سنا دیا ہے۔ بین الاقوامی عدالت نے كلبھوشن جادھو کی پھانسی پر روک لگاتے ہوئے پاکستان سے اس فیصلے پر نظر ثانی کرنے کے لئے کہا ہے۔ اس کے علاوہ بین الاقوامی کورٹ نے کہا کہ پاکستان نے ویانا کنونشن کا بھی خلاف ورزی کی ہے۔

كلبھوش جادھو کو نہیں ہوگی پھاسي
كلبھوشن جادھو پاکستان کی جیل میں بند ہے۔ جادھو کو پاکستان کی فوجی عدالت نے پھانسی کی سزا سنائی تھی، جس کے خلاف بھارت نے مئی 2017 میں بین الاقوامی عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔ اب بین الاقوامی کورٹ نے كلبھوشن جادھو پر فیصلہ سناتے ہوئے پھانسی پر روک لگا دی ہے اور پاکستان کو اس پر نظر ثانی کرنے کے لئے کہا ہے۔اب پاکستان كلبھوشن جادھو کو پھانسی نہیں دے سکتا ہے۔ بین الاقوامی کورٹ کے کل 16 ججوں میں سے 15 نے بھارت کے حق میں فیصلہ دیا ہے۔ کورٹ میں پاکستان کے ایک جج نے بھارت کے خلاف فیصلہ دیا ہے۔ اب اس معاملے پر دوبارہ سماعت ہوگی۔

کونسلر اےكسےس
بین الاقوامی عدالت نے كلبھوشن جادھو کو کونسلر رسائی دینے کے لئے بھی کہا ہے۔ بتا دیں پاکستان نے كلبھوشن جادھو کونسلر رسائی بھی نہیں دی ہے۔ کونسلر رسائی میں غیر ملکی شہری کو اپنے ملک کی کونسل خانے اور سفارت خانے کے افسر سے رابطہ کرنے کی اجازت دی جاتی ہے، لیکن پاکستان نے كلبھوشن جادھو کو پاک میں موجود کسی بھی ہندوستانی افسر سے رابطہ کرنے نہیں دیا۔اب بین الاقوامی کورٹ کے فیصلے کے بعد پاکستان کو كلبھوشن جادھو کو کونسلر رسائی کی اجازت دینی ہوگی۔ مطلب اب ہندوستانی افسر كلبھوشن جادھو سے رابطہ کر سکتے ہیں اور پاکستان کو اس کی اجازت بھی انہیں دینی ہوگی۔

ویانا کنونشن کا دوشي
بین الاقوامی عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا کہ پاکستان نے ویانا کنونشن کی خلاف ورزی کی ہے۔ ویانا کنونشن ایک بین الاقوامی قانون ہے جو دو ممالک کے درمیان سفارتی تعلقات کو کنٹرول کرتا ہے۔ كلبھوشن جادھو صورت میں، بھارت نے ICJ میں دلیل دی تھی کہ پاکستان نے ویانا کنونشن کی خلاف ورزی کی، کیونکہ اس نے كلبھوشن جادھو کو سزا سے پہلے کونسلر رسائی (سفارتی مدد) فراہم نہیں کیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *