ہائی کورٹ کا اسپیکر کے خلاف دائر درخواست پر سماعت سے انکار

Share Article

 

دہلی ہائی کورٹ نے عام آدمی پارٹی چھوڑ کر بی جے پی میں شامل ہوئے ممبر اسمبلی انل باجپئی اور دیویندر سہراوت کی اسپیکر رام نواس گوئل کے خلاف دائر درخواست پر سماعت سے انکار کر دیا ہے۔ دونوں نے مطالبہ کیا تھا کہ اسپیکر گوئل کو ان کے خلاف نااہل قرار دینے والی عرضی پر سماعت سے علیحدہ ہونے کا ہدایات جاری کیا جائے۔

 

درخواست میں کہا گیا تھا کہ عام آدمی پارٹی نے ان کے خلاف اسپیکر کے یہاں پٹیشن دائر کرکے نااہل قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ الزام تھا کہ اسپیکر عام آدمی پارٹی کے حق میں کام کرتے ہیں، اس لئے انہیں اس عرضی پر سماعت سے علیحدہ ہونے کا ہدایات جاری کیا جائے، یہ بھی کہا گیا تھا کہ اسپیکر رام نواس گوئل احتجاجی مظاہروں میں جاتے ہیں جو اسپیکر کے وقار کے خلاف ہے۔ وہ عام آدمی پارٹی کے راج گھاٹ پر ہوئے احتجاج میں شامل ہوئے تھے۔

 

درخواست میں کہا گیا تھا کہ اسپیکر نے اسمبلی سیشن کے دوران لیفٹیننٹ گورنر کے حکم کے خلاف احتجاج کے طور پر سیاہ پٹی باندھی تھی، گوئل نے انتخابات کے دوران ’آپ‘ کے لئے سرگرم طور پر پرچار کیا تھا۔ ایسے میں اسپیکر کی طرف سے ان کے خلاف دائر درخواست پر منصفانہ سماعت کا امکان نہیں ہے۔

 

قابل ذکر ہے کہ دیویندر سہراوت اور انل باجپئی نے دہلی میں لوک سبھا انتخابات کے پہلے 3 مئی کو بی جے پی جوائن کیا تھا۔ اس کے بعد گزشتہ 20 جون کو عام آدمی پارٹی نے ان کے خلاف اسپیکر کے یہاں عرضی دائر کر دی تھی۔ دیویندر سہراوت نے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا، سپریم کورٹ نے کہا تھا کہ آپ اپنی بات اسپیکر کے سامنے رکھیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *