ہاپوڑ میں گئو رکشکوں کے تشدد پر ہدایات دینے سے سپریم کورٹ کا انکار

Share Article

 

نئی دہلی، سپریم کورٹ نے یوپی کے ہاپوڑ میں گورکشکوں کے تشدد کے معاملے میں فی الحال یوپی حکومت کو آگے جانچ کو لے کر کوئی بھی ہدایات دینے سے انکار کر دیا ہے۔ کورٹ نے حملے کے شکار اور درخواست گزارسمیع الدین سے کہا کہ وہ تحقیقات اور گواہوں کے بیان کو لے کر اپنی بات ٹرائل کورٹ میں رکھیں۔

 

گزشتہ 17 مئی کو درخواست گزار نے سپریم کورٹ سے کہا تھا کہ تحقیقات درست سمت میں نہیں چل رہی ہے۔اسلئے سپریم کورٹ کیس کی سماعت کرے۔

 

گزشتہ 2 مئی کو اس معاملے میں اتر پردیش پولیس نے تحقیقات کی اسٹیٹس رپورٹ سپریم کورٹ کو سونپی تھی۔ کورٹ نے رپورٹ کو درخواست گزار سمیع الدین اور مہتاب کو دینے کی ہدایت دی تھی۔ گزشتہ 8 اپریل کو کورٹ نے اترپردیش حکومت سے اسٹیٹس رپورٹ طلب کی تھی۔ کورٹ نے یوپی حکومت سے کہا کہ آپ اس معاملے کی تحقیقات اور ٹرائل سے متعلق رپورٹ داخل کریں۔ اس معاملہ میں متوفیقاسم کے بیٹے مہتاب نے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کرکے مطالبہ کیا ہے کہ اس معاملے کی جانچ اترپردیش کے باہر کی ایس آئی ٹی سے کرائی جائے۔ گزشتہ 11 فروری کو عرضی پر سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے یوپی حکومت کو نوٹس جاری کرکے جواب مانگا تھا۔ کورٹ نے اس درخواست کو بھی سمیع الدین کی درخواست کے ساتھ منسلک کر دیا ہے۔

 

5 ستمبر 2018 کو سمیع الدین کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے معاملے کی جانچ میرٹھ رینج کی براہ راست نگرانی میں کرنے کا حکم دیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *