حج کے خواہش مند شہریوں سہولت فراہم کرے قطر حکومت : سعودی عرب

Share Article

 

سعودی عرب اور قدر کے درمیان چلنے والے تنازعہ میں عازمین حج بھی پس رہے ہیں۔حج کا فریضہ ادا کرنے کے خواہش مند قطری شہریوں کو متعدد پریشانیوں کا سامنا ہے ۔سعودی عرب کی جانب سے یہ الزامات عائد کے جاتے رہے ہیں کہ قطری حکومت عازمین حج کے لئے پریشانیاں کھڑی کر رہے ہے وہیں دوسری جانب قطری حکام کا کہنا ہے کہی سعودی حکومت قطری شہریوں کو مملکت میں داخل ہونے میں روکاوٹ پیدا کررہی ہے ۔انہیں الزامات کے درمیان آج سعودی حکومت نے قطری حکام سے اپیل کی ہے کہ وہ عازمین حج کے لئے سہولت پیدا کریں۔سعودی عرب کی حج اور عمرے کی وزارت نے قطر میں متعلقہ حکام پر زور دیا ہے کہ وہ فریضہ حج کی ادائی کے خواہش مند قطری شہریوں کی مملکت آمد کو آسان بنائے اور اس حوالے سے قطری حکومت کی جانب سے عائد رکاوٹوں کو ختم کرے۔

 

میڈیا رپورٹوں کے مطابق سعودی وزارت حج نے ہفتے کے روز جاری بیان میں باور کرایا کہ خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی حکومت قطر سے معتمرین اور عازمین حج کی آمد کو آسان بنانے کے لیے اسی طرح تمام تر وسائل بروئے کار لانے کی خواہش مند ہے جس طرح عموما پوری دنیا کے عازمین حج کے واسطے خواہش رکھتا ہے۔ رواں سال 1440 ہجری کے لیے دنیا بھر سے 17 لاکھ سے زیادہ عازمین حج کی آمد پر اتفاق ہوا ہے جب کہ اس سال کے دوران دنیا بھر سے 80 لاکھ کے قریب مسلمانوں نے عمرہ ادا کیا۔

 

سعودی وزارت حج و عمرہ نے قطر کی وزارت اوقاف و اسلامی امور کی جانب سے ان دعوؤں کو مسترد کر دیا کہ سعودی حکومت عمرے اور حج کے خواہش مند قطری عازمین کی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کر رہی ہے اور قطری حج وعمرہ کمپنیوں کو مملکت میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دے رہی ہے۔ بیان کے مطابق یہ دعویٰ حقیقت کے برخلاف ہے۔ سعودی وزارت حج و عمرہ نے کئی ویب سائٹس لنکس متعارف کروائے تا کہ قطری شہری اور قطر میں مقیم غیر ملکی حج کے سلسلے میں اپنے قیام کے مقامات کی بْکنگ اور مطلوب خدمات کا کنٹریکٹ کر سکیں۔ یہ لوگ قطری فضائی کمپنی کے سوا کسی بھی فضائی کمپنی سے آ سکتے ہیں۔

 

سعودی وزارت حج نے زور دیا کہ مملکت حج کو سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کرنے کی کسی بھی کوشش کو یکسر مسترد کر چکی ہے۔ وزارت نے اپنے بیان میں باور کرایا کہ حج اور عمرے کے مناسک کی ادائیگی کے لیے قطر سے سعودی عرب آنے والے تمام برادران کا خیر مقدم جاری رہے گا۔ وزارت اس بات کی خواہش مند ہے کہ یہ لوگ پوری دنیا کے بقیہ تمام حجاج اور معتمرین کی طرح مکمل سہولت اور آسانی کے ساتھ اپنے مناسک ادا کریں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *