اعظم خان پر بڑی کارروائی، یونیورسٹی سے ہٹےگا غیر قانونی قبضہ، ادا کرنے ہوں گے 3 کروڑ روپے

Share Article

 

ذیلی کلکٹر نے یونیورسٹی کے اندر جا رہے عوامی راستے سے غیر مجاز قبضہ ہٹانے کو کہا ہے۔ اس کے علاوہ اعظم خاں کو معاوضہ کے طور پر 3 کروڑ 27 لاکھ 60 ہزار اور قبضہ آزاد ہونے تک 9،10،000 فی مہینہ کی شرح سے 15 دن کے اندر وادی محکمہ تعمیرات عامہ کو دینے کا حکم دیا ہے۔

سماج وادی پارٹی کے ایم پی اعظم خاں کی مشکلیں کم ہونے کا نام نہیں لے رہی ہیں۔ رام پور میں مولانا محمد جوہر علی یونیورسٹی کو لے کر ذیلی کلکٹر نے بڑا حکم دیا ہے۔ ذیلی کلکٹر نے یونیورسٹی کے اندر جا رہے عوامی راستے سے غیر مجاز قبضہ ہٹانے کو کہا ہے۔

اس کے علاوہ اعظم خاں کو معاوضہ کے طور پر 3 کروڑ 27 لاکھ 60 ہزار اور قبضہ آزاد ہونے تک 9،10،000 فی مہینہ کی شرح سے 15 دن کے اندر وادی محکمہ تعمیرات عامہ کو دینے کا حکم دیا ہے۔

اعظم پر وزارت داخلہ کا شکنجہ
اعظم خاں کی جوہر یونیورسٹی کی زمینوں کے تنازع پر وزارت داخلہ نے نوٹس لیا ہے۔ اس کی وجہ سے اعظم خاں مشکل ہر دن بڑھتی ہوئی نظر آ رہی ہے۔ وہ چاروں طرف سے گھرے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔ اب چاہے وہ اقتدار پارٹی کے لوگ ہوں یا حزب اختلاف کے لوگ، دونوں ہی ان کے خلاف کھڑے ہیں۔

حکومت میں رہتے ہوئے اعظم خان نے جو بھی قوانین خلاف کام کئے تھے لوگ ان سب کی شکایات اب کررہے ہیں۔ پہلے وزیر رہے نواب کاظم علی خاں عرف نوید میاں نے دشمن پراپرٹی کی شکایت وزارت داخلہ سے کی تھی۔

ان کا الزام تھا کہ سابق وزیر اعظم خاں نے دشمن کی پراپرٹی کو اپنی جوہر یونیورسٹی میں شامل کر کے اس پر ناجائز قبضہ کر لیا ہے۔ ساتھ ہی اس پر اپنی یونیورسٹی بھی چلا رہے ہیں۔ اسی کی شکایت نوید میاں نے وزارت داخلہ سے کی جس کا جواب انہیں ملا اور وزارت داخلہ نے خط بھیج کر یقین دلایا کہا جلد ہی مناسب کارروائی کی جائے گی۔

دراصل، رام پور میں نواب کاظم علی خاں عرف نوید میاں (سابق وزیر مملکت اور آزاد چارج اقلیتی بہبود محکمہ اترپردیش حکومت) نے وزارت داخلہ سے شکایت کی تھی۔ ان کی شکایت تھی کہ اعظم خان نے 13.8420 ہیکٹر كسٹوڈيم زمین اپنی یونیورسٹی میں شامل کر کے غیر قانونی طور پر قبضہ کر لیا ہے۔

3،27،60000 روپے کی تلافی کریں اعظم خان- کورٹ
رام پور کے ایس ڈی ایم کورٹ نے بھی اعظم خاں پر پیچ کستے ہوئے کہا ہے کہ جوہر یونیورسٹی کے راست میں غیر قانونی تعمیر اور تجاوز فورا ہٹایا جائے۔ آرڈر میں عدالت نے کہا ہے کہ اعظم خاں 3،27،60000 روپے کی تلافی کریں اور جب تک قبضہ مکمل طور پر ہٹ نہیں جاتا اس وقت تک اعظم خان کو ہر ماہ 91 لاکھ روپے دینے ہوں گے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *