قدیمی طبی طریقہ کار کو جدید بنانے میں مصروف ہے حکومت : وزیر اعظم

Share Article

 

وزیر اعظم نریندر مودی نے قدیمی طبی طریقہ کار پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارے پاس ہزاروں سال پرانا ادب ہے اور ویدوں میں سنگین بیماریوں سے متعلق علاج کا وسیع پیمانے پرتذکرہ ہے، لیکن بدقسمتی سے ہم اپنی قدیمی طبی تحقیق کو جدید کاری سے جوڑنے میں زیادہ کامیاب نہیں ہو سکے ۔ انہوں نے کہا کہ آیور ویدک میں بھی سنگین بیماریوں کے علاج کا پورا بندوبست ہے۔ اس کو ذہن میں رکھ کرموجودہ حکومت نے گزشتہ پانچ سالوں میں اس صورت حال کو تبدیل کرنے کی مسلسل کوشش کی ہے۔ یوگا کے بعد اب ہمیں آیش کے دیگر طریقہ کار کو بھی دنیا بھر میں پہنچانا ہے۔ یوگا نے کھڑکی کھول دی ہے اور اب دروازے کھلنے میں دیر نہیں لگے گی۔

یہاں جمعہ کے روز وگیان بھون میں منعقد ہیوگا ایوارڈ تقسیم تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ آیور وید، یوگا اور نیچروپیتھی ، سدھا، یونانی اورہومیوپیتھی کے بعد لداخ کا طبی طریقہ کار ’سووا-رگپا‘ آیش خاندان 6واں رکن ہو گیا ہے۔
وزیر اعظم نے موجودہ وقت میں کھانے پینے کے طریقہ میں آئی تبدیلی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ جس موٹے اناج کو، کھانے کو ہم نے چھوڑ دیا، اس کو دنیا نے اپنانا شروع کر دیا ہے۔ جو، جوار، راگی، کودو، ساما، باجرا، ساوا، ایسے متعدد اناج کبھی ہمارے کھانے کا حصہ ہوا کرتے تھے لیکن اب یہ تمام چیزیں ہماری تھالیوں سے غائب ہو گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ دنیا میں تمام ممالک اور وہاں کے لیڈروں سے ملے ہیں اور دلچسپ بات یہ ہے کہ کوئی کتنا بھی بڑا لیڈر ہو، ان کے ساتھ وہ بات چیت کا آغاز یوگا سے ہی کرتا ہے۔

مودی نے کہا کہ دنیا کا کوئی بھی شخص جو بھارت کی زبان بھی نہیں جانتا ہے لیکن جب یوگا کی بات آتی ہے تو سوچتا ہے کہ اچھا ہوتا کہ وہ یوگا سے جڑ جاتا۔ انہوں نے کہا کہ اس کا سہرا ہمارے عظیم لوگوں کو جاتا ہے، جنہوں نے اس ایک فن کو لے کر خود کو وقف کیا۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں آئش کا جو جدید بنیادی ڈھانچہ تیار ہو رہا ہے اس کے فوائد بھی وسیع ہیں۔ بالخصوص چھوٹے چھوٹے دیہات، قصبوں، شہروں میں گھر کے قریب صحت کی خدمات مل رہی ہیں۔ نئے اسپتال بننے سے طبی سے منسلک پورے نظام وہاں تیار ہو رہے ہیں۔ حکومت جب ملک میں 1.5 ملین ہیلتھ اینڈ ویلنس سینٹر کھول رہی ہے تو آیش کو بھی وہ نہیں بھولی ہے۔ ملک بھر میں 12 ہزار 500 آیش سینٹر بنانے کا ہمارا مقصد ہے۔ ہماری کوشش ہے کہ ایسے چار ہزار آیش سینٹر اسی سال ہم تیار کر دیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ آیشمان بھارت منصوبہ بندی کے تحت جتنے مریضوں کو اب تک مفت علاج ملا ہے، وہ اگر اس کے دائرے میں نہ ہوتے تو انہیں 12 ہزار کروڑ روپے سے زیادہ خرچ کرنے پڑتے۔ ایک قسم سے ملک کے لاکھوں غریب خاندانوں کے 12 ہزار کروڑ روپے کی بچت ہوئی ہے۔

دو دن پہلے ہی حکومت نے 75 نئے میڈیکل کالج بنانے کا بھی فیصلہ لیا ہے۔ اس سنگین بیماریوں کے علاج کے لئے سہولیات میں اضافہ تو ہو گا ہی، ساتھ ہی ایم بی بی ایس کی قریب 16 ہزار سیٹیں بڑھیں گی۔ انہوں نے کہا کہ صرف ماڈرن میڈیسن ہی نہیں، آیش کی تعلیم میں بھی زیادہ اور بہتر پروفیشنلز آئیں، اس کے لئے ضروری اصلاحات کی جا رہی ہیں۔ اس موقع پر وزیر اعظم نے آیش طریقہ کار میں بہتر خدمات انجام دینے والی 12ہستیوں کے اعزاز میں ڈاک ٹکٹ بھی جاری کیا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *