اسرائیل کی طرف سے ایندھن کی سپلائی روکنے کے بعد غزہ میں بجلی گھر بند

Share Article
Israel blocking fuel supply to Gaza’s power plant

فلسطینی حکام کا کہنا ہے کہ اسرائیل کی طرف سے غزہ کی پٹی کو ایندھن کی سپلائی روکنے کے بعد غزہ کی پٹی کے آدھے علاقے کو بجلی فراہم کرنے والا مرکزی پاور اسٹیشن بند کردیا گیا ہے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق غزہ میں فلسطینی حکام کا کہنا ہے کہ اسرائیل کی طرف سے غزہ کو ایندھن کی فراہمی روکے جانے کے نتیجے میں بحران مزید گھمبیر ہوگا اور غزہ کے محصور عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوگا۔خیال رہے کہ گذشتہ روز اسرائیلی وزیراعظم بنجامن نیتن یاہو نے غزہ سے راکٹ حملے کے بعد محاصرہ زدہ فلسطینی علاقے میں منتقل کیے جانے والیایندھن کی مقدار نصف کردی ہے۔

اسرائیلی فوج نے سوموار کو غزہ کی پٹی کو ایندھن کی مقدار نصف کرنے کا اعلان کیا تھا اور کہا ہے کہ یہ اقدام تاحکم ثانی جاری رہے گا۔غزہ کی پٹی سے اسرائیل کے جنوبی علاقے کی جانب اتوار اور سوموار کی درمیانی شب تین راکٹ فائر کیے گئے تھے۔اس کے بعد صہیونی فوج نے غزہ پر فضائی حملے کیے تھے۔ان میں ایک حملے میں غزہ کے شمال میں حماس کے ایک کمانڈر کے دفتر کو نشانہ بنایا گیا تھا۔تاہم اس حملے میں کسی کے زخمی ہونے کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔اسرائیل کے جنوبی قصبے سدیروت میں راکٹ حملے سے قبل انتباہی سائرن بجائے گئے تھے۔اس وقت وہاں موسیقی کا ایک میلہ جاری تھا اور سائرن بجنے کے بعد پنڈال میں افراتفری پھیل گئی تھی اور لوگ ادھر ادھر بھاگنا شروع ہوگئے تھے۔ صہیونی فوج کا کہنا ہے کہ اس کے میزائل دفاعی نظام نے دو راکٹوں کوناکارہ بنا دیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *