سابق کرکیٹرسچن تیندولکر نے اپنے الودعی لمحہ کویادکیا

Share Article
sachin
بھلے ہی ماسٹربلاسٹرسچن تیندولکرکرکٹ کوچاربرس قبل الوداع کہہ دیاہے مگرآج بھی انکے فین فلورس میں کوئی کمی نہیں ہے۔پہلے جیساہی ان کواب بھی یادکیاجاتاہے۔چارسال پہلے آج ہی کے دن ’کرکٹ بھگوان‘ کہے جانے والے سچن تیندولکرآخری بارمیدان پراترے تھے۔ممبئی کے وانکھیڑے اسٹیڈیم پر16نومبر2013کادن ان کے فینس کوآج بھی یادہے۔اس دن ٹیم انڈیانے ویسٹ انڈیزکے خلاف ٹسٹ سیریز 2-0سے جیت کرماسٹربلاسٹرسچن تیندولکرکوایک یادگاروداعی دی تھی۔تیندولکرکے اس وداعی میچ میں ٹیم انڈیانے ویسٹ انڈیزکو؂تیسرے ہی دن ایک پاری اور126رنوں سے ہرادیاتھا۔فینس میچ کے تین دن میں ختم ہونے سے مایوس دکھائی دیئے تھے کیونکہ سچن کودوبارہ بیٹنگ کرتے ہوئے دیکھناچاہتے تھے۔جیت کے بعدانہیں گارڈ آف آنردیا۔اسی پل کویادکرتے ہوئے سچن نے اپنے انسٹگرام اکاؤنٹ پروداعی میچ کی تصویرشیئرکرتے ہوئے لکھاکہ’یہ دن میرے لئے کریئرکے سب سے مشکل دنو ں میں سے ایک تھا،لیکن میں بالکل بھی اکیلانہیں تھاکیونکہ میرادیش ، میراخاندان میرے ساتھ تھا‘۔
عیاں رہے کہ سچن نے وداعی تقریرمیں کہاتھاکہ فینس کے ’سچن …سچن…‘لفظ میرے ذہن میں ہمیشہ گونجتے رہیں گے۔سچن نے نم آنکھوں کے ساتھ 22گزکے پچ کونمن کیااوراسٹمپ اٹھاکرناظرین وشائقین کاشکریہ اداکرتے ہوئے پویلین لوٹنے لگے ۔مہندرسنگھ دھونی، وراٹ کوہلی ، شیکھردھون اوردیگرہندوستانی کھلاڑیوں نے سچن کواپنے کاندھے پراٹھاکرمیدان کے چکربھی لگائے تھے۔تیندولکرنے اس میچ میں 74رنو ں کی پاری کھیلی اوراس کے علاوہ دواوورگیندبازی بھی کی تھی۔سچن کا وہ 200واں ٹیسٹ میچ تھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *