تین طلاق کو لے بنائے گئے سخت قانون کے باوجود اس کے واقعات رکنے کا نا م نہیں لے رہے ہیں۔ میرٹھ کے بھاون پو تھانہ علاقہ میں پیش آیا معاملہ اس کی نظیر ہے، جہاں دو سگے بھائیوں نے اپنی بیویوں دو سگی بہنوں کو میکے میں ہی جا کرایک ساتھ تین طلاق د ے دیا۔ متاثرہ خواتین نے پیر کے روز ایس ایس پی سے درخواست لگاتے ہوئے کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔
لساڑی گیٹ تھانہ علاقہ کی رہنے والی دو سگی بہنیں انجم اور تبسم کی شادی سال 2016 میں برہم پوری کے جاٹو گیٹ رہائشی سرتاج اور اس کے بھائی فراز کے ساتھ ہوئی تھی۔ متاثرہ خواتین کا الزام ہے کہ جہیز کی مانگ کو لے کر اکثر ان کے سسرال والے انہیں ہراساں کیا کیا کرتے تھے۔ مارپیٹ کے ساتھ ساتھ کئی بار چھت کے جال میں کرنٹ چھوڑ کر سسرال والوں نے دونوں بہنوں کے قتل کی کوشش بھی لیکن جب اس میں ناکام رہے تو سال 2017 میں دونوں بہنوں کو تبسم کے نوزائدہ بچے سمیت گھر سے باہر نکال دیا۔
متاثرہ بہنوں نے بتایا کہ اس معاملے میں انہوں نے اپنے سسرال والوں کے خلاف مقدمہ درج کرایا تھا جو عدالت میں زیر غور ہے۔
متاثرہ بہنوں کا الزام ہے کہ اتوار کی شام ان کے شوہر اور سسرال والے ان کے گھر پر آئے اور ان پر مقدمہ واپس لینے کا دباؤ بنایا۔ اسی کے ساتھ انہیں یہ بھی بتایا کہ اب ان کے شوہروں کو ان کی ضرورت نہیں ہے، کیونکہ انہوں نے دوسری شادیا ںکر لی ہیں۔ اتنا ہی نہیں ملزمین نے دونوں بہنوں کے ساتھ مارپیٹ کرتے ہوئے انہیں تین بار طلاق بول کر ان سے کنارہ کر لیا۔ متاثرہ خواتین نے پیر کے روز ایس ایس پی آفس میں شکایت کرتے ہوئے ملزمین شوہروں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ ایس ایس پی اجے ساہنی نے معاملے میں تحقیقات کا حکم دیا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here