’بیگ میں کنڈوم‘ پر سخت ہوئی بیگو سرائے پولیس، 16 کے خلاف FIR درج

Share Article

 

لوک سبھا انتخابات کے دوران شهلارشید JNU طالب علم یونین کے سابق صدر اور بیگو سرائے میں CPI کے امیدوار رہے کنہیا کمار کے پرچار میں گئی تھیں۔ اسی دوران ان پر قابل اعتراض تبصرہ کی گئی تھی۔

جواہر لال نہرو یونیورسٹی کی طالب علم رہنما شهلا راشد پر قابل اعتراض تبصرہ پر بیگو سرائے میں 16 لوگوں پر ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ نگر تھانے میں درج اس معاملے میں تمام کے خلاف نامزد ایف آئی آر کی گئی ہے۔ معلومات کے مطابق ضلع پولیس نے یہ کارروائی دہلی کی سماجی کارکن جینایمن کی خواتین کمیشن سے شکایت کے بعد کی ہے۔

Shehla rashid

ای میل کے ذریعے درج کروائی گئی FIR
بتا دیں کہ جینایمن نے ای میل کے ذریعے آئی ٹی ایکٹ کے تحت یہ مقدمہ درج کرایا ہے۔ ان کی شکایت ہے کہ اپریل میں انتخابی مہم میں شامل ہونے شهلا راشد بیگو سرائے گئی تھیں۔ اس وقت بیگوسرائے ٹوڈے ویب سائٹ کے فیس بک پیج پر ان کے خلاف توہین آمیز تبصرہ کی گئی تھی۔

جینا یمن نے جن 16 افراد کو نامزد ملزم بنایا ہے ان میں مقامی کیشو بھاردواج کے ساتھ روشن راج، منیش کمار، رتیش جھا، جیوتی، اے وی وپن شرما، کنہیا سنگھ، راہل شرما، وینکٹیش کمار سنگھ، ایس پروہت، منجیش پروہت، متوش کمار شاڈلي، ونود کمار منڈل، مختار سنگھ اور چوکیدار نتیش کمار سمیت 16 شامل ہیں۔ ان پر آئی پی سی کی دفعات میں ایف آئی آر درج کرائی گئی ہے۔

Image result for shehla rashid comment of fb in begusarai

شهلا راشید پر کی گئی تھی ناخوشگوار تبصرہ
بتا دیں کہ لوک سبھا انتخابات کے دوران شهلا JNU طالب علم یونین کے سابق صدر اور بیگو سرائے میں CPI کے امیدوار رہے کنہیا کمار کے پرچار میں آئی تھیں۔ اسی دوران ان پر قابل اعتراض تبصرہ کی گئی تھی۔

شہلا کی وائرل ویڈیو پر ردعمل
دراصل گزشتہ اپریل مہینے میں شهلا کی ایک ویڈیو وائرل ہوا تھا جس میں شهلا کہہ رہی ہیں، ‘ ہندو ہو یا مسلمان، سارے امیر شخص شام کو ہوٹل میں بیٹھ کر ایک ساتھ بیف کھاتے ہیں اور دارو پیتے ہیں۔

ویڈیو کی بنیاد پر شہلا تبصرہ کیا گیا۔
اگرچہ اس بات کی تصدیق نہیں ہو پائی تھی کہ ویڈیو انتخابی مہم کے دوران کا ہی ہے، لیکن اس کے بعد شهلا بہت سے لوگوں کے نشانے پر آ گئی تھیں۔ ویڈیوز کی بنیاد پر ان پر بہت ساری قابل اعتراض تبصرے کی گئی تھیں۔

فیس بک پر شیئرکئے گئے تھے ناخوشگوار پوسٹ
شهلا رشید کے بارے میں فیس بک پر کئی طرح کی پوسٹ شیئر کی جا رہی تھیں۔ کئی لوگوں نے ان کے بارے میں لکھا، بیگو سرائے میں پولیس کی تحقیقات میں شهلا رشید بیگ سے ملے کنڈوم۔ یہ کنہیا کے لئے وہاں تشہیر کرنے گئی ہے یا انتخابی خرچ نکالنے۔

غور طلب ہے کہ اپریل میں شهلا رشید اپنے ہی کالج کے پاس آؤٹ کنہیا کمار کے فروغ کے لئے بیگو سرائے گئی تھیں۔ بہرحال بیگو سرائے پولیس نے دیر سے ہی سہی ایف آئی آر درج کر لی ہے۔ اب دیکھنے والی بات یہ ہوگی کہ آگے کیا کارروائی ہوتی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *