پارلیمنٹ میں حلف برداری کے بعد کیوں چھوئے تھے اسپیکر کے پاؤں؟ نصرت جہاں نے بتایا وجہ

Share Article

 

نصرت جہاں نے پارلیمنٹ میں اپنی حلف برداری کے بعد جاکر اسپیکر کے پاؤں چھوئے تھے جس کے بعد پارلیمنٹ میں بہت ڈرامائی ماحول بن گیا تھا۔ اس بارے میں بات کرتے ہوئے اداکارہ اور ایم پی نے کہا کہ مجھے پتہ بھی نہیں تھا کہ مجھ سے پہلے کسی نے ایسا نہیں کیا ہے۔

لوک سبھا انتخابات 2019 میں جیت کے بعد سے ہی بنگالی اداکارہ نصرت جہاں بحث میں ہیں۔ وہ اپنے پہناوے اور پارلیمنٹ میں اپنے پروگریسیو نظریئے کے سبب سرخیاں بٹور رہی ہیں۔ ساتھ ہی پارلیمنٹ میں اپنی کئی سرگرمیوں کو لے کر بھی وہ بحث میں رہی ہیں۔

نصرت جہاں نے پارلیمنٹ میں اپنی حلف برداری کے بعد جاکر اسپیکر کے پاؤں چھوئے تھے، جس کے بعد پارلیمنٹ میں بہت ڈرامائی ماحول بن گیا تھا۔ اس بارے میں بات کرتے ہوئے اداکارہ اور ٹی ایم سی ممبر پارلیمنٹ نے کہا کہ ‘مجھے پتہ بھی نہیں تھا کہ مجھ سے پہلے کسی نے ایسا نہیں کیا ہے۔ یہ کافی نیچرل تھا۔وہ مجھ سے بڑے ہیں، کرسی پر بیٹھے ہیں اور ہمارے کلچر میں سکھایا گیا ہے کہ بڑوں کا احترام کرنا چاہئے تو میں نے جا کر ان سے دعائیں لے لی تھی۔ مجھے نہیں لگتا کہ اس کا کوئی مسئلہ بننا چاہئے۔

نصرت نے یہ بھی کہا کہ انہوں نے اس دوران جو بھی کیا اس کو لے کر بہت سوچا سمجھا نہیں تھا اور ان کے جوابات اسی حساب سے تھیں جیسا انہیں اس وقت محسوس ہوا تھا۔ اس پر رپوٹر نے ان سے پوچھا کہ کیا سیاست میں سوچ نہ چلنے پر انہیں پریشانیوں کا سامنا تو نہیں کرنا پڑے گا؟

اس پر بات کرتے ہوئے نصرت نے کہا کہ ‘میں سیاست میں اپنے آپ کو تبدیل کرنے نہیں آئی ہوں بلکہ لوگوں کی زندگی میں مثبت تبدیلی لانا چاہتی ہوں۔ مجھے سنیما میں کئی بار اپنی شناخت تبدیل کرنے کے لئے کہا گیا تھا۔ مجھے یہ بھی کہا گیا تھا کہ مجھے بنگالی سنیما میں ٹکے رہنے کے لئے اپنا نام تبدیل کرنا چاہئے لیکن اس کے باوجود میں نے کبھی اپنے آپ کو تبدیل نہیں کیا کیونکہ میں چاہتی ہوں کہ میں جیسی ہوں لوگ مجھے اسی طور پر اپنایا اور میں سیاست میں بھی اپنی اس شخصیت کے ساتھ ہی تبدیلی لانا چاہتی ہوں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *