الیکشن جیتا تو اسمبلی میں جموں کشمیر کی خودمختاری کی قرار داد پاس کریں گے: فاروق عبداللہ 

Share Article
farooq-abdullah
ہارون ریشی
نیشنل کانفرنس کے سرپرست اور رکن پالیمنٹ فاروق عبداللہ نے کہا ہے کہ اگر ان کی پارٹی جموں کشمیر کے اسمبلی انتخابات میں واضح اکثریت جیت جائے گی تو حکومت بنانے کے بعد صرف ایک ماہ کے اند اندر ریاست کی اٹانومی کی قرار داد اسمبلی میں پاس کریں گے۔یہ بات انہوں نے آج سرمائی دار الحکومت جموں میں کہی ۔ انہوں نے اس موقع پر بی جے پی کے سابق رکن اسمبلی گگن بھگت کی نیشنل کانفرنس میں شمولیت کرنے پر ان کا خیر مقدم کیا۔گگن بھگت ، جنہوں نے سال 2014میں جموں صوبے کے آر ایس پورہ حلقہ سے الیکشن جیتا تھا،کو بی جے پی نے حال ہی میں پارٹی سے نکال دیا۔انہوں نے ریاست کے گورنر ستہ پال ملک کی جانب سے ریاستی اسمبلی کو تحیل کرنے کے حالیہ اقدام کو سپریم کو رٹ میں چیلنج کیا تھا۔ سپریم کورٹ نے ان کی درخواست مسترد کردی اور اسی روز بی جے پی نے انہیں پارٹی سے نکال باہر پھینکا۔اب گگن بھگت نے نیشنل کانفرنس میں شمولیت اختیار کرلی ہے۔اس موقعے پر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جموں کشمیر کی اٹانومی کی بحالی پارٹی کا بنیادی ایجنڈا ہے ۔
انہوں نے کہا اگر آنے والے اسمبلی انتخابات میں نیشنل کانفرنس کا واضح اکثریت حاصل ہوئی تو حکومت بننے کے بعد ایک ماہ کے اندر اندر اسمبلی اٹانومی قرارداد پاس کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا، ’’اگر اللہ نے مجھے صحت دی اور ہم مکمل اکثریت کے ساتھ اقتدار میں آگئے تو میں حکومت بننے کے تیس دن کے اندر اندر ایسا کرکے دکھاؤں گا۔‘‘ یہ بات قابل ذکر ہے کہ نیشنل کانفرنس نے جون 2000ء میں ریاستی اسمبلی میں دو تہائی اکثریت سے اٹانومی کی قرارداد پاس کی تھی ۔اسکے بعد اسکی منظوری کے لئے اسے مرکزی سرکار کے پاس بھیج دیا گیا۔ لیکن مرکزی سرکار نے اس قرار پر کوئی چرچا کئے بغیر ہی اسے مسترد کردیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *