فاروق عبداللہ کا سوال:’ پتھرباز بہتر تھے یا جیش محمد کے دہشت گرد؟ ‘

Share Article
farooq-abdullah
نیشنل کانفرنس کے رہنما اور جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ نے ایک پروگرام کے دوران کہا کہ وادی میں گورنر راج نافذ ہوتے ہی دہشت گرد تنظیم جیش محمد کو شہ مل گیا، ساتھ ہی انہوں نے سوال کیا کہ اس صورت حال میں کون بہتر تھا، جیش محمد یا پھر پتھرباز۔ گورنر رول میں پتھر بازی کم ہونے کے مرکز کے دعوے پر فاروق عبداللہ نے کہا، ’گورنر رول میں اگر پتھر بازی رک گئی تو کیا جیش محمد بڑھ گیا۔ کیا وہ (جیش محمد) بہتر تھا یا پتھرباز بہتر تھے۔ یہ بتاؤ۔‘
آگے انہوں نے کہا، ’اب جب جموں جل رہا تھا تو مجھے یہ بتائیے تو کیا گورنر صاحب کو راج بھون چھوڑ کر ان جگہوں پر نہیں پہنچنا چاہیے تھا۔کیا انہیں ان سے نہیں کہنا چاہئے تھا کہ خبردار!…. یہ چیزیں یہاں نہیں چل سکتی۔گورنر رول کشمیر کے لئے بالکل بھی درست نہیں رہا۔ ‘
جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یہاں جموں و کشمیر میں گورنر راج فیل رہا ہے، یہاں عوام کی حکومت ہونی چاہئے اور اس کے لئے ہونے والے انتخابات میں صحیح مشین کا استعمال کرنا چاہئے، چور مشین کا استعمال نہیں کرنا چاہئے۔ دہلی اور کشمیر ایک ہدف کو لے کر آگے بڑھیں گے تو مسئلہ جلد حل ہوگا۔ پی ایم مودی کی مدت کیسی رہی اس پر انہوں نے کہا کہ یہ عام انتخابات بتائے گا کہ ان کا دور اقتدار کیسا رہا۔
علیحدگی پسندوں سے سیکورٹی چھیننے پر انہوں نے کہا،حکومت نے ہی انہیں سیکورٹی مہیا کرائی تھی جسے اب چھین لیا ہے۔ حکومت نے تو کانگریس رہنماؤں اور نیشنل کانفرنس کے لیڈروں سے بھی سیکورٹی چھین لی ہے، ایسے ہی کشمیر کے رہنماؤں سے سیکورٹی چھینی جاتی رہی تو وادی میں ترنگا کون تھامے گا۔قوم کو کشمیر کے مسلمانوں پر یقین جتانے کی ضرورت ہے، ہم ہندوستانی ہیں، میں نے کبھی پاکستان کی حمایت میں نعرے بازی نہیں کی۔
پلوامہ حملے پر فاروق عبداللہ نے آج تک سے بات چیت میں کہا تھاکہ یہ انٹیلی جنس کی ناکامی ہے۔ انہوں نے کہا، ہم خود دہشت گردی کے شکار ہیں۔ ان دہشت گردوں نے ہمارا جینا حرام کر دیا ہے، جو یہ حملے کر رہے ہیں، انہیں سخت سزا ملنی چاہئے۔یہ ہمارے امن کو ختم کر رہے ہیں، ہمارے بچوں کی زندگی ختم کر رہے ہیں، ایسے لوگوں کو بے نقاب کرنا چاہئے۔ مقامی نوجوانوں کے دہشت گردوں کا ساتھ دینے کے سوال پر فاروق نے کہا کہ پتھرباز کا نہ تو میں نے کبھی ساتھ دیا ہے اور نہ ہی ہماری جماعت نے ان کا ساتھ دیا ہے۔ انہوں نے ہمارا جینا حرام کر دیا ہے۔ یہ وطن کے دشمن ہیں۔ دنیا ستاروں کے اوپر جا رہی ہے اور ہم زمین دوز ہو رہے ہیں۔ یہ کب تک چلے گا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *