گجرات بی جے پی سربراہ جیتوبھائی پر الیکشن کمیشن کی سختی،تشہیر کرنے پر 72 گھنٹے کی روک

Share Article

 

الیکشن کمیشن نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے پر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے گجرات سربراہ جیتوبھائی وگھانی پر 72 گھنٹے تک انتخابی مہم میں حصہ چلانے پر روک لگا دی ہے۔

 

 

لوک سبھا انتخابات میں کسی قسم کی کوئی سیاسی پارٹی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی نہ کر پائے، اس کو لے کر الیکشن کمیشن سخت نظر بنائے ہوئے ہیں۔ اسی کڑی میں الیکشن کمیشن نے جیتوبھائی وگھانی کو ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے معاملے کو لے کر ایک نوٹس جاری کیا ہے۔ وگھانی کی طرف سے ایک انتخابی ریلی میں نازیبا زبان کا استعمال کرنے کے الزام میں کمیشن نے ان پر 72 گھنٹے تک انتخابی تشہیر کرنے کی پابندی لگا دی ہے۔ ان پر پابندی دو مئی کو شام چار بجے سے نافذہوگی۔ گجرات میں لوک سبھا انتخابات تیسرے مرحلے میں 23 اپریل کو ہوئے تھے۔ ریاست میں ایک مرحلے میں تمام لوک سبھا سیٹوں پر انتخاب ہوئے تھے۔

 

الیکشن کمیشن کے مطابق سات اپریل کو سورت کے امرولی کی ایک انتخابی ریلی میں جیتوبھائی وگھانی نے پارٹی کارکنوں اور ووٹروں سے خطاب کرتے ہوئے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی اور غیر شائستہ زبان کا استعمال کیا تھا۔ اس کو لے کر الیکشن کمیشن نے وگھانی کو 72 گھنٹے تک ملک کے کسی بھی حصے میں جلسہ عام، روڈ شو اور کسی بھی قسم کی انتخابی سرگرمیوں میں حصہ لینے پر پابندی لگا دی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *