الیکشن کمیشن نے عام آدمی کے 21 اراکین اسمبلی سے جواب مانگا

Share Article
election-commission-logo
دہلی حکومت میں پارلیمانی سکریٹری کا عہدہ سنبھالنے والے عام آدمی پارٹی کے 21 اراکین اسمبلی پر الیکشن کمیشن نے سختی برتتے ہوئے نوٹس بھیج کر اپنا تحریری جواب اور سپورٹ کرنے والی دستاویز 16 اکتوبر تک جمع کرنے کو کہا ہے۔ کمیشن کی جانب سے بھیجے گئے نوٹس میں کہا گیا ہے کہ ان کے خلاف گزشتہ 13 مارچ 2015 سے 8 ستمبر 2016 تک یعنی کمیشن میں شکایت آنے اور کارروائی شروع ہونے تک پارلیمانی سکریٹری کا کام سنبھالا تھا۔ پانچ بار اراکین اسمبلی کے خلاف اس شکایت کی سماعت کمیشن میں ہوئی۔ 15 نومبر، 22 نومبر، 7 دسمبر، 16 دسمبر اور 27 مارچ کو الیکشن کمیشن کے ہیڈ کوارٹر میں سماعت ہوئی۔ اس کے بعد 23 جون 2017 کو الیکشن کمیشن نے حکم دے کراراکین اسمبلی سے تحریری جواب مانگا تھا۔ اس کے جواب کچھ اراکین اسمبلی نے تو بھیجے لیکن کچھ اراکین اسمبلی نے ابھی تک اپنے جواب نہیں بھیجے ہیں۔ اب الیکشن کمیشن نے ان اراکین اسمبلی کو آخری موقع دیا ہے کہ وہ اپنا تحریری جواب 16 اکتوبر تک بھیج دیں تاکہ آگے کی کارروائی تیز ہوسکے۔ الیکشن کمیشن نے کہا ہے کہ مبینہ اراکین اسمبلی اپنے تحریری جواب کمیشن کو پانچ کاپیوں میں دیں اور جواب کی ایک کاپی شکایت کنندہ پرشانت پٹیل کوبھی بھیجیں۔ واضح ہوکہ دہلی کے 21 اراکین اسمبلی کا الیکشن کمیشن میں فائدے کے عہدے والا معاملہ زیر سماعت ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *