مہاراشٹر میں مستحکم حکومت بنانے کی کوشش جاری: سنجے راوت

Share Article

 

ممبئی، شیوسینا کے ترجمان سنجے راوت نے منگل کو کہا کہ مہاراشٹر میں مستحکم حکومت بنانے کی کوشش جاری ہے۔ جلد ہی ریاست کو صدر راج سے آزاد کرائے جائیگا۔ شیوسینا -این سی پی اور کانگریس اتحاد کی حکومت بنے گی۔

انہوں نے صحافیوں سے کہا، شرد پوار ملک کے تجربہ کار لیڈر ہیں اور ان کو سمجھنے کے لئے 100 بار جنم لینا پڑے گا۔ پوار کی قیادت میں حکومت کی تشکیل پر کام چل رہا ہے۔ حکومت بننے کے بعد اسمبلی میں شیوسینا 170 ممبران اسمبلی کی حمایت کو ثابت کر دے گی۔ حکومت بنانے کو لے کر شیوسینا میں کسی طرح کی جلد بازی یا غلط فہمی نہیں ہے۔ راوت نے کہا کچھ لوگ حکومت تشکیل میں رکاوٹ پیدا کر رہے ہیں۔ بی جے پی نے اپنا سب سے بڑا ساتھی گنوا دیا ہے۔ ابھی شیوسینا کسانوں کے معاملے پر جارحانہ کردار اختیار کرنے والی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ پیر کو دہلی میں کانگریس کی عبوری صدر سونیا گاندھی سے بحث کے بعد شرد پوار نے کہا تھا کہ شیوسینا کو لے کر حکومت بنانے کی کوئی بات سونیا گاندھی سے نہیں ہوئی۔ وہ اپنے اتحاد ی پارٹی کے ساتھیوں کے ساتھ اس بارے میں بات چیت کرنے کے بعد ہی کوئی فیصلہ لے سکتے ہیں۔ اس سے ریاست میں حکومت کی تشکیل کو لے کر بحث شروع ہو گئی تھی۔اس پر سنجے راوت نے کہا کہ شرد پوار ریاست میں ایک بڑی پارٹی کے لیڈر ہیں اور ان کی پارٹی نے اتحاد میں الیکشن لڑا ہے۔اس لئے ان کا اتحاد پارٹی کے ساتھیوں کے ساتھ بحث کرنا ضروری ہے۔ راوت نے کہا کہ غیر بی جے پی پارٹی کے سبھی لیڈران چاہتے ہیں کہ ریاست میں صدر راج ختم ہو۔

اس دوران ذرائع نے کہا ہے کہ دہلی میں شرد پوار کی سونیا گاندھی سے شیوسینا -این سی پی -کانگریس کی حکومت بنانے پر وسیع بحث ہوئی۔ اس بحث میں شیوسینا کا پانچ سال تک وزیر اعلی، این سی پی اور کانگریس کا نائب وزیر اعلی بنانے پر بحث ہوئی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *