پٹنہ: تاوان کے لئے انسپکٹر کی بیٹی کو کر لیا اغوا، چند گھنٹوں میں برآمد

Share Article

kidnaps-mobile-inspectors-d

پٹنہ: نتیش بابو کے بہار میں اغوا اور تاوان کے کیس رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ اب تاوان کے لئے نقل و حمل کے سیکشن کے موبائل انسپکٹر منوج کمار رنجن کی دو سال کی بیٹی کو اغوا ان کے ہی ڈرائیور نے کر لیا تھا۔حالانکہ چند گھنٹے میں پولیس نے اغوا بچی کو برآمد کر لیا ہے۔

پولیس کے مطابق، موبائل انسپکٹر منوج کمار رنجن کی بیٹی مشٹی کماری عمر دو سال ہے اور ان ہی کے نجی ڈرائیور چندر شیکھر نے اس کو اغوا کر لیا تھا، جیسے ہی بیگو سرائے میں تعینات افسر کو اس کا پتہ چلا تو انہوں نے اس کی خبر پولیس کو دی۔ اس کے بعد حرکت میں آئی پولیس چند گھنٹوں بعد ہی ارول کے کرپی میں چھاپہ مار کر ڈرائیور کو گرفتار کر لیا اور بچی کو آزاد کرا لیا۔

موبائل انسپکٹر کا پریوار شاہ پور تھانے کے مبارکپور میں رہتا ہے۔ پیر کی دوپہر ان کی بیوی پرینکا کو ہولی کی خریداری کے لئے مارکیٹ جانا تھا۔ گاڑی لے کر ان کا ڈرائیور گھر کے دروازے پر کھڑا تھا۔ پانچ سال کا بیٹا پرینکا کے ساتھ تھا، جبکہ بیٹی مشٹی گاڑی میں بیٹھ گئی۔ تبھی موقع ہاتھ لگتے ہی ڈرائیور بچی کو لے کر بھاگ نکلا۔ جب پرینکا نے گاڑی نہیں دیکھی تو آس پاس کے لوگوں سے پوچھ گچھ کی۔ محلے والوں نے بتایا کہ گاڑی ڈرائیور چندر شیکھر لے کر چلا گیا ہے، اس میں مشٹی بھی تھی۔

پٹنہ کی ایس ایس پی گریما ملک نے بتایا کہ اغوا کے معاملات میں پٹنہ پولیس نے بچے کو بحفاظت برآمد کر لیا ہے۔ پولیس کو جیسے ہی اغوا کی خبر ملی کئی ٹیمیں قائم کر چھاپہ ماری شروع کر دی گئی تھی۔ وائرلیس پر میسج فلیش ہوا۔ اس وقت تک ڈرائیور بچی کو لے کر کرپی پہنچ گیا، اسی درمیان کرپی پولیس کی نظر گاڑی پر پڑی۔ پولیس نے کار ڈرائیور کو رکنے کا اشارہ کیا، لیکن وہ بھاگنے لگا، مگر پولیس نے دوڑا کر اسے پکڑ لیا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *