کیجریوال کو ڈنمارک جانے کی اجازت نہیں دینا قابل مذمت: سنجے سنگھ

Share Article

عام آدمی پارٹی (عآپ) کے سینئر لیڈر اور راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے منگل کے روز مرکز کی نریندر مودی حکومت پر متعصبانہ طریقہ سے کام کرنے کا الزام لگایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزارت خارجہ کے ذریعہ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کو ڈنمارک سفر کی اجازت نہیں دینا ملک کی جمہوریت اور وفاقی ڈھانچے کے لئے بہتر نہیں ہے۔

سنجے سنگھ نے یہاں صحافیوں سے بات چیت میں کہا کہ اروند کیجریوال کے ڈنمارک سفر کو وزارت خارجہ سے اجازت نہیں ملی ہے۔ کیجریوال کو آج دوپہر میں ایک وفد کے ساتھ ڈنمارک کے لئے روانہ ہونا تھا۔ ڈنمارک میں بدھ سے چار روزہ سی -40 ماحولیاتی کانفرنس شروع ہو رہی ہے۔ کیجریوال وہاں ایشیا کے سو شہروں کے میئروں کی موجودگی میں دہلی میں 25 فیصد آلودگی میں کمی کے اقدامات کو بتانے والے تھے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ نے اس سلسلے میں سوا ماہ پہلے ہی وزارت خارجہ کو مطلع کر دیا تھا۔ وزارت سے کیجریوال کو منظوری نہیں ملی جبکہ ایک ہفتے پہلے درخواست دینے والے کولکاتہ کے شہری ترقی کے وزیر کو اجازت دے دی گئی۔ یہ کیجریوال کا ذاتی سفر نہیں تھا۔ مودی حکومت کا ایسا برتاؤ ہماری سمجھ سے باہر ہے۔

سنجے نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ مرکز اور بی جے پی دہلی کے کاموں کو عالمی سطح پردکھانے سے ڈر گئے ہیں۔ دہلی کے وزیر اعلیٰ کیجریوال اور دہلی کے وزیروں کو مرکز کی بی جے پی حکومت بیرون ملک آفیشیل پروگراموںمیں جانے سے روک کر اپنی بدنیتی جگ ظاہر کر رہی ہے۔

بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے لیڈر اور سابق وزیر کپل مشرا نے کیجریوال کو اجازت نہیں ملنے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا، مرکزکے ذریعہ کجریوال کا سفر پر روکنا خوش آئند ہے۔ بین الاقوامی پلیٹ فارم پر کیجریوال دہلی اور ملک کی بے عزتی کروانے والے تھے۔ آلودگی میں کمی کے جھوٹ کو بے نقاب ہونا طے تھا۔ اخبارات میں جھوٹے اشتہارات دینے کے بعد پوری دنیا میں جھوٹ بول کر دہلی کی توہین کروانے کی تیاری تھی۔

قابل ذکر ہے کہ کیجریوال کے ڈنمارک کے دورے کے سلسلے میں وزارت خارجہ نے پہلے ہی واضح کر دیا تھا کہ پروگرام کی نوعیت اور اس میں کون حصہ لے رہے ہیں، اس کو ذہن میں رکھتے ہوئے ہی یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *