گوڈسے کو محب وطن بتانے پر پرگیہ کے خلاف تادیبی کارروائی

Share Article

 

۔سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کو امور دفاع کی ایڈوائزری کمیٹی سے ہٹایاگیا
۔ اس اجلاس میں پرگیہ کے بی جے پی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں شرکت پر لگی روک

بھارتیہ جنتا پارٹی نے جمعرات کے روز بھوپال سے ممبر پارلیمنٹ سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کے لوک سبھا میں دئے گئے بیان کی مذمت کرتے ہوئے ان کے خلاف تادیبی کارروائی کی ہے۔ بھارتیہ جنتا پارٹی کے ایگزیکٹو چیئرمین جے پی نڈڈا نے کہا کہ پارٹی اس طرح کے خیالات کی حمایت نہیں کرتی ہے۔ بدھ کے روز ایوان میں پیش ہوئے ایس پی جی ترمیمی بل پر بحث کے دوران ڈی ایم کے رہنما اے راجا نے بحث میں مہاتما گاندھی کے قتل سے منسلک ناتھورام گوڈسے کا نام لیا تھا۔ یہ سنتے ہی بی جے پی ایم پی پرگیہ ٹھاکر نے اپنی سیٹ پر کھڑی ہو کر گوڈسے کو محب وطن بتایا اور اے راجا کے بیان کی مخالفت کی۔ اس پر ایوان میں فوری طور پر ہنگامہ ہوا اور لوک سبھا کی کارروائی سے ان کے بیان کو ہٹا دیا گیا۔ نڈا نے بتایا کہ سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کودفاعی امور کی ایڈوائزری کمیٹی سے ہٹا دیا گیا ہے اور اس اجلاس میں انہیں بی جے پی کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں شرکت پر پابندی لگا دی گئی ہے۔

کانگریس نے بدھ کے روز لوک سبھا میں بی جے پی کی ایم پی سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کے ذریعہ مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کو مبینہ طور پر محب وطن بتانے کی مذمت کی تھی۔ کانگریس کے ٹوئٹر کے اکاؤنٹ سے کہا گیا کہ بار بار ناتھو رام گوڈسے کو ایک ‘محب وطن’ کے طور پرظاہرکرنا بی جے پی کی نفرت کی سیاست کی عکاسی ہے۔ کیا پی ایم مودی پرگیہ ٹھاکر کے تبصرہ کی مذمت کریں گے یا خاموش رہیں گے؟

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *