مرکز اور الیکشن کمیشن کو دہلی ہائی کورٹ کا نوٹس

Share Article

 

مذہب سے جڑے نام والے علامات کا استعمال کرنے والی جماعتوں کا جائزہ لینے کا معاملہ

 

دہلی ہائی کورٹ نے مذہب سے جڑے نام والے یا قومی پرچم جیسے علامتوں کا استعمال کرنے والے جماعتوں کا جائزہ لینے کی ہدایات جاری کرنے کا مطالبہ کرنے والی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے مرکزی حکومت اور الیکشن کمیشن کو نوٹس جاری کیا ہے۔

 

عرضی بی جے پی لیڈر اور وکیل اشونی اپادھیائے نے دائر کی ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ اگر ایسی پارٹیاں تین ماہ کے اندر انہیں نہیں بدلتی ہیں تو ان کا رجسٹریشن منسوخ کر دیا جائے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ مذہب سے جڑے نام کا استعمال کرنے یا قومی پرچم جیسے علامتوں کا استعمال امیدوار کے امکانات کو متاثر کر سکتا ہے اور یہ عوامی نمائندگی قانون کے تحت بدعنوانی کی علامت ہے۔عرضی میں ہندو سینا، آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین اور انڈین یونین مسلم لیگ کا ذکر کیا گیا ہے۔ عرضی میں کانگریس اور دوسری ان سیاسی جماعتوں کا ذکر کیا گیا ہے جو قومی پرچم جیسے جھنڈے کا استعمال کر رہی ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *