داراشکوہ کی کتابوں کو قومی کونسل اردو میں شائع کرے گی : ڈاکٹر شیخ عقیل احمد

Share Article

 

قومی اردو کونسل کے صدر دفتر میں داراشکوہ پروجیکٹ کی میٹنگ کا انعقاد

داراشکوہ صلح کل کے علمبردار، فارسی، عربی اور سنسکرت کے متبحر عالم اور تصوف کے رموز و اسرار سے مکمل طور پر آگاہ تھے۔ انھوں نے ویدانت کا بہت ہی گہرائی سے مطالعہ کیا تھا۔ وہ نہایت وسیع المشرب اور کشادہ ذہن کے حامل تھے۔ مذہبی رواداری اور سماجی ہم آہنگی پر ان کا یقین کامل تھا۔ انھوں نے اسلام اور ہندو ازم کے مشترکات کی جستجو کی اور محبت اور انسانیت کے پیغام کو عام کیا۔وہ قومی یکجہتی اور اتحاد کا ایک نشانِ امتیاز تھے۔ صوفیا اور رِشی منیوں سے گہری عقیدت رکھتے تھے۔ انھوں نے 52 اپنشدوں کا نہ صرف فارسی میں ترجمہ کیا بلکہ انہی کے ترجمے کی وجہ سے باہری دنیامیں اپنشدوں کا مکمل تعارف ہوا۔ آج کے تناظر میں داراشکوہ کی فکر اور فلسفے کی معنویت بڑھ گئی ہے۔ اسی لیے اردو میں ان کی کتابوں کا ترجمہ بہت ضروری ہے۔ یہ باتیں قومی اردو کونسل کے ڈائرکٹر ڈاکٹر شیخ عقیل احمد نے کونسل کے صدر دفتر میں منعقدہ داراشکوہ پروجیکٹ کی میٹنگ میں کہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ اس پروجیکٹ کا مقصد یہ ہے کہ داراشکوہ کی تصنیفات کا اردو ترجمہ شائع کیا جائے تاکہ اردو قارئین داراشکوہ کی فکر اور فلسفے سے واقف ہوسکیں۔ مذہبی اور تہذیبی تصادم کے اس عہد میں ہمارے لیے اس نقطہ اشتراک کی جستجو بہت ضروری ہے جس کی طرف داراشکوہ نے برسوں پہلے اشارہ کیا تھا۔ انھوں نے سیکڑوں برس پہلے بین المذاہب مکالمے کی اہمیت کو سمجھا تھا۔ اس لیے اس مکالمے کو زندہ کرنے کی ضرورت بڑھ گئی ہے۔ اسی مقصد کے تحت ان کی تمام تصنیفات کو قومی اردو کونسل نے اردو میں منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے پروفیسر آزرمی دخت صفوی نے کہا کہ کونسل کا یہ قدم قابل صد ستائش ہے۔ یہ ایک اہم پروجیکٹ ہے جو کونسل کی تاریخ میں ایک سنگ میل ثابت ہوگا۔ میٹنگ میں داراشکوہ کی تصانیف: حسنات العارفین، سرِّ اکبر، سفینۃ الاولیائ، سکینۃ الاولیائ، مجمع البحرین، رسالہ حق نما وغیرہ کی اشاعت پر بھی گفتگو کی گئی۔ میٹنگ کے آخر میں کونسل کے ڈائرکٹر نے کہا کہ اگر کسی نے داراشکوہ پر تحقیقی کام کیا ہے یا کرنا چاہتا ہے تو قومی اردو کونسل ایسے تحقیقی مقالات/کتابوں کو ترجیحی طور پر شائع کرے گی۔

میٹنگ میں پروفیسر آزر می دخت صفوی کے علاوہ پروفیسر عبدالقادر جعفری (الٰہ آباد)، پروفیسر شاہد نوخیز اعظمی (مانو، حیدرآباد)، قومی اردو کونسل کی اسسٹنٹ ڈائرکٹر( اکیڈمک)ڈاکٹر شمع کوثر یزدانی، اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسرڈاکٹر فیروز عالم اور ریسرچ اسسٹنٹجناب محمد انصر نے بھی شرکت کی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *