بہادر والد کی داستان، گولی لگنے کے باوجود بیٹی کو پہنچایا امتحان مرکز

Share Article
ramkirpal
بیگوسرائے:ماں کے ممتاکی کہانی توہم سبھی نے سنی ہے لیکن بہار کے اس  والد کے جرات کا قصہ ملک بھر میں سراہا جا رہا ہے۔واقعہ بہارکاہے،یہاں بیگوسرائے میں بیٹی کوانٹرکاامتحان دلانے جارہے سابق مکھیااورآرجے ڈی لیڈررام کرپال مہتو کوبدمعاشوں نے بدھ کوگولی ماردی۔اس کے باوجودزخمی رام کرپال نے 6کلومیٹربائک چلاکرانٹرکی طالبہ بیٹی کوجے کے اسکول واقع میں سینٹرمیں پہنچایا۔بیٹی امتحان دینے سینٹرکے اندرچلی گئی،اس کے بعدوہ علاج کیلئے اسپتال پہنچے۔انہیں دوگولیاں لگی تھیں۔ان کے خاندان کا کہناہے کہ وہ بیٹی کی کرےئرکولیکرکوئی سمجھوتہ نہیں کرناچاہتے تھے، اس لئے انہوں نے اپنی پرواہ نہیں کی۔بہارکے اس بہادروالدکی داستان کی بحث ملک بھرمیں ہورہی ہے۔
damini
عینی شاہدین کے مطابق، مہتو اپنی بیٹی دامنی کوبائک پرامتحان دلانے کیلئے سینٹرلے جارہے تھے۔تبھی بدمعاشوں نے رام کرپال کے سرپرپستول تان کر ان کی کان پٹی پرگولی مارنے کی کوشش کی۔بائک پرپیچھے بیٹھی بیٹی نے ہمت کے ساتھ ان بدمعاشوں کا سامنا کیا اورپستول چھیننے کی کوشش کی۔اس سے گولی والدکی کان پٹی کے بجائے سینے میں جاکرلگی۔گولی چلنے کے باعث دامنی کے دونوں ہاتھ بارود کی وجہ سے معمولی زخمی ہوگئے۔ مجرموں نے حملہ ویرپور تھانہ علاقہ کے پھولکاری کے بیچ واقع تلراہی میں صبح قریب ساڑھے سات بجے کیاتھا۔لیکن زخمی حالت میں والدنے بیٹی سے کہاکہ میں اسپتال بعدمیں چلاجاؤں گا پہلے تجھے ایگزام سینٹرچھوڑدوں ،ورنہ تمہاراسال بربادہوجائے گا۔
ان کا علاج بیگوسرائے کے ایک پرائیویٹ اسپتال میں کیاجارہاہے۔جہاں ان کی حالت نازک بنی ہوئی ہے۔ مہتوکے سینے میں بائیں اوردائیں طرف گولیاں لگی ہیں۔ گولی مارنے کے بعد مجرم دوبائک سے ویرپورکی طرف بھاگ گئے۔مجرموں کی تعداد 6بتائی جارہی ہے۔بہارپولس معاملے کی جانچ کررہی ہے۔ویسے بہارمیں بڑھتے ہوئے جرائم نہ صرف تشویش کا موضوع بناہواہے،بلکہ یہ بہارمیں جنگل راج کہنے بیان کررہاہے،سوشاسن بابوکے راج میں بہارمیں یہ جنگل راج بہارپولس کی ناکامیوں کی بھی پول کھول رہاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *