آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے میں مشیل کی ضمانت کی درخواست مسترد

Share Article
christian-mishel
نئی دہلی: آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملے میں دہلی کی ایک عدالت نے ہفتہ کو کرشچین مشیل کی ضمانت کی درخواست مسترد کر دی ہے۔ مشیل کو اگستاویسٹ لینڈ وی وی آئی پی ہیلی کاپٹر کی خریداری میں مبینہ 3,600 کروڑ روپے کے گھوٹالہ معاملے میں گرفتار کیا گیا ہے۔ سی بی آئی اورانفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کی جانب سے دائر کئے گئے معاملے میں خصوصی جج اروند کمار نے مشیل کی درخواست مسترد کر دی۔ مشیل کو دبئی سے سپرد کیا گیا ہے۔ گزشتہ سال 22 دسمبر کو ای ڈی نے اسے گرفتار کیا۔ ای ڈی کے ذریعہ ریکارڈ معاملے میں 5 جنوری کو مشیل کو عدالتی حراست میں بھیجا گیا، اس گھوٹالے سے منسلک سی بی آئی کے معاملے میں وہ عدالتی حراست میں ہے۔ مشیل ان تین مبینہ بچولیوں میں سے ایک ہے جس کی جانچ ای ڈی اور مرکزی جانچ ایجنسی کر رہی ہے۔ دو دیگر شخص گوئدوہاشکے اور کارلو گیرویسا ہیں۔
کیا ہے کرشچین مشیل کی تاریخ؟
کرشچین مشیل پر آگسٹا۔ویسٹ لینڈ ڈیل میں 36,00 کروڑ روپے کی منی لانڈرنگ اور رشوت لینے کا الزام ہے۔مشیل مشہورآگسٹا ویسٹ لینڈ گھوٹالہ معاملے میں ان 3 دلالوں میں سے ایک ہیں، جن کے خلاف تحقیقات کی جا رہی ہے۔گوئدوہاشکے اور کارلو گیرویسا بھی اس گھوٹالے میں شامل ہیں۔ 57 سالہ مشیل، فروری 2017 میں گرفتاری کے بعد سے دبئی کی جیل میں تھا۔ اسے یو اے ای میں قانونی اور عدالتی کارروائی کے زیر التواء رہنے تک حراست میں بھیج دیا گیا تھا۔ہندوستان نے 2017 میں یو اے ای سے مشیل کو ہندوستان کو سپرد کرنے کی سرکاری اپیل کی تھی، اس سلسلے میں یو اے ای کی عدالت کو ضروری دستاویزات بھی سونپے گئے۔
معاملے میں 350 کروڑ کی رشوت مشیل کو سونپی گئی تھی
الزام ہے کہ آگسٹا ویسٹ لینڈ نے ڈیل فائنل کرنے کے لئے مشیل کو تقریباً 350 کروڑ روپے سونپے تھے، جو ہندوستانی سیاستدانوں، ایئر فورس کے افسران اور نوکر شاہوں کو دینے تھے۔مشیل نے رشوت کی رقم ٹرانسفر کرنے کے لئے دو کمپنیوں گلوبل سروسز ایف زیڈ ای، دبئی اور گلوبل ٹریڈ اینڈ کامرس سروسز، لندن کا استعمال کیا تھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *