اسکول کے ڈرامہ میں لڑکی کے اذان پڑھنے پر تنازعہ

Share Article
azan-by-girl
اسکول میں لڑکی کے ذریعے اذان پڑھنے پرتنازع ہوگیاہے۔بتایاجارہاہے کہ کیرل کے کوجھی کوڈ کے ایک اسکول میں ڈرامہ میں لڑکی کے اذان پڑھنے کی وجہ سے تنازعہ کھڑا ہونے کے بعد اسکول نے ریاستی سطح پر مقابلے میں اس پر پابندی عائد کر دی ہے۔ کوجھی کوڈ کے وٹاکرا میں میمونڈا ہائی اسکول نے راجسو ضلع اسکول آرٹ فیسٹیول میں پہلا مقام حاصل کیا۔ مصنف آر اُنّی کی کہانی ’وانکھ‘ پر مبنی ڈرامہ ’کتاب‘میں اہم کردار نبھانے والی لڑکی کو بہترین اداکار کا اعزاز ملا ہے۔
ویب پورٹل فرسٹ پوسٹ کے مطابق،یہ تنازعہ تب اٹھا جب ڈرامہ کا انتخاب اسکولی سطح پر مقابلے کیلئے ہوا۔ ’کتاب‘ ایک ایسی لڑکی کی کہانی ہے جو اپنے مؤذن والد کی طرح اذان پڑھنا چاہتی ہے۔ کیرالہ سنی اسٹوڈینت فیڈریشن اور سنی یو جن سنگھم نے ڈرامہ کے خلاف مظاہرہ کرتے ہوئے الزام لگایا کہ اس سے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچی ہے اور کمیونٹی کے ایک گروپ کو غلط طریقے سے دکھایا گیا ہے۔روایت کے تحت اذان صرف مرد پڑھ سکتے ہیں۔ مظاہرین نے الزام لگایا ہے کہ ڈرامے نے مسلمانوں کی طرز زندگی کی توہین کی ہے۔
اسکول ہیڈ ماسٹر پی کے کرشنا داس نے کہا کہ اسکول کسی کے بھی جذبات کو ٹھیس نہیں پہنچانا چاہتا اس لئے ریاستی سطح مقابلے سے اسے واپس لینے کا فیصلہ کیا۔ ڈرامہ کو پروڈیوس کرنے والے رفیق منگل سیری نے کہا کہ انتہا پسندوں کے دباؤ کی وجہ سے ڈرامہ کا انعقاد نہیں کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *