ٹریفک جام نے کیاجینا حرام

Share Article
okhla
اگرآپ قومی راجدھانی دہلی میں مسلم اکثریتی علاقہ اوکھلا کے کسی بھی حصے میں رہتے ہیں اور آپ اپنے گھر سے نکل کر اپنی منزل پر با آسانی پہنچ جاتے ہیں تو اس دن آپ خود کو خوش قسمت مان سکتے ہیں ۔در اصل ان دنوں اوکھلا میں ٹریفک جام اس قدر بڑھ گیا ہے کہ لوگوں کو بہت پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔کچھ لوگوں نے اپنی دکانوں اور ٹھیلوں کو اس قدر سڑک پر کرلیا ہے کہ آنے جانے والوں کہ لئے جگہ کم بچتی ہے۔اتنا ہی نہیں بلکہ کچھ لوگ اپنی گاڑیوں کو سڑک پر ہی کھڑی کردیتے ہیں ۔جس کی وجہ سے ہلکا پھلکا ٹریفک بھی بڑے جام کی صورت لے لیتا ہے۔اور ایسی صورت میں جو لوگ جام میں پھنسے ہوتے ہیں ان کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوجاتا ہے اور وہ اپنی گاڑیوں کو رانگ سائیڈ پر لے لیتے ہیں اور دیکھتے ہی دیکھتے ایسا ٹریفک جام ہو جاتا ہے کہ ایک ہی جگہ سے گاڑی کئی منٹوں میں ہلتی ہے۔
ٹریفک جام کی وجہ سے دن بہ دن عام لوگوں کی زندگی مشکل سے مشکل تر ہوگئی ہے۔کوئی اپنے آفس کے لئے لیٹ ہوجاتا ہے کوئی اپنے اسکول کے لئے لیٹ ہوجاتا ۔اسی طرح سے ہر کوئی اس ٹریفک جام کی وجہ سے کسی نہ پریشانی میں پڑجاتا ہے۔اس ٹریفک جام کی طرف لوکل انتظامیہ کوسخت توجہ دینے کی ضرورت ہے۔تاکہ ٹریفک جام سے عوام کوباآسانی نجات مل سکے۔
جمال اختر
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *