نئے کردار میں چترانگدا

Share Article

چترانگدا سنگھ نے اپنے کریئر کا آغاز 2003میں آئی فلم ’’ہزاروں خواہشیں‘‘ سے کیا تھا۔ انھوں نے ا س فلم سے بے حد سرخیاں بٹوریں اور بالی ووڈمیں شاندار انٹری کی۔اب یہاں بھی سائنس فکشن کی فلمیں رفتہ رفتہ اپنی پکڑ مضبوط کرتی جا رہی ہیں۔خوش آئند بات یہ ہے کہ جہاں فلم ساز منطقی خیالات لے کر آرہے ہیں، وہیں اداکار بھی تجربات کا استعمال کر رہے ہیں۔خبر ملی ہے کہ چترانگدا اپنی آنے والی فلم میں کچھ ایسا کرنے والی ہیں۔ یہاں بات ہو رہی ہے فلم ’’کرش 3‘‘ کی، جس میں وہ ’’فیمیل میوٹینٹ‘‘ کے کردار میں نظر آئیں گی۔ غور طلب ہے کہ جینس کے ڈی این اے اسٹرکچر میں بدل جانے سے انسان کو میوٹینٹ کہا جاتا ہے۔ بالی ووڈ میں ابھی تک آف بیٹ رول سے تعریف بٹورنے والی چترانگدا پہلی بار فل کمرشیل پروجیکٹ میں نظر آئیں گی۔ وہ روہت دھون کی فلم دیسی بوائز میں بھی کام کر رہی ہیں۔’’کرش 3‘‘ میں دو اداکارائیں ہوں گی۔ جس میں پرینکا پچھلی فلم کے مطابق ہی اپناکردار اداکریں گی، اورچترانگدا اس میں میوٹینٹ کے ساتھ نظر آئیں گی۔ انہیں کرش 3میں ان کی حال ہی میں ریلیز فلم ’’یہ سالی زندگی‘‘ دیکھنے کے بعد سائن کیا گیا تھا۔ امید ہے کہ چترانگدا کو اپنے سائنسی کردار میں بھی سنجیدہ ڈانس کرنے کا موقع ملے گا۔
چھوٹے پردے کی مشکلیں
آج فلموں میں کام نہ ملنے کی وجہ سے بالی ووڈ اداکارائیں چھوٹے پر دے پرزیادہ نظر آنے لگی ہیں۔ اس کی مثال آپ پریتی زنٹا سے لے سکتے ہیں، جو اس وقت’’ گنیز بک آف ریکارڈ‘‘ کے انڈین ایڈیشن شو کو ہوسٹ کر رہی ہیں۔ پریتی کی فلم ریلیز ہوئے طویل عرصہ گزر چکا ہے۔ انھوں نے آئی پی ایل اور نیس واڈیا کے چکر میں اپنے فلمی کریئر کو دائوں پر لگا دیا۔ شاید انھوں نے سوچا ہوگا کہ وہ فلمیں بعد میں سائن کر لیں گی، لیکن ایسا نہیں ہوا۔ بالی ووڈ میں اب نئی نئی اداکارائیں آ چکی ہیں۔ پریتی کے ساتھ کام کرنے والے شاہ رخ، عامر اور سلمان بھی نئی اور جوان اداکارائوں میں دلچسپی لینے لگے ہیں۔ پریتی نے خوب کوشش کی کہ بعد میں انہیں فلمیں مل جائیں، لیکن یہ ممکن نہیں ہو سکا ۔ پریتی نے چھوٹے پردے کا دامن یہ سوچ کر تھاما، کیونکہ انہیں بڑے پردے پر کوئی پوچھ ہی نہیں رہا تھا۔ انھوں نے سوچا کہ چھوٹے پردے پر کام کریں گی تو وہ لوگوں کی نگاہوں میں بنی رہیں گی۔ وہ شاید لوگوں کو یہ بتانا چاہتی ہیں کہ وہ کام میں مصروف ہیں لیکن جب وہ اسٹیڈیم میں کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کرتی نظر آتی ہیں تو ناظرین انہیں بے روزگار سمجھ لیتے ہیں۔ اب پریتی کو محسوس ہونے لگا ہے کہ ٹی وی پر کام کرنا بہت مشکل ہوتا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ فلموں میں کام بہت دھیمی رفتار سے ہوتا ہے، لیکن ٹی وی کی دنیا فلمی دنیا سے بالکل مختلف ہے۔ یہاں بغیر رکے مسلسل کام کرنا پڑتا ہے، وقت کا دھیان رکھنا پڑا ہے۔ پریتی کو ٹی وی فنکاروں کا درد سمجھ میں آ گیا ہے اور انہیں ان کے تئیں ہمدردی ہونے لگی ہیں،لیکن اب سوائے افسوس کے وہ کیا کر سکتی ہیں۔
ریا کے نخرے
اداکارائوں کے پاس فلمیں ہو ںیا نہ ہوں ، خواہ وہ فلاپ ہی کیوں نہ رہی ہوں، لیکن تب بھی ان کے نخرے نرالے رہتے ہیں، جو انہیں اچھا لگتا ہے وہی کرتی ہیں۔ ایسا ہی کچھ بنگلہ بیوٹی ریا سین نے کیا۔ ان کے پاس اس وقت فلموں کا فقدان ہے، لیکن باوجود اس کے ان کے نخرے کمال کے ہیں۔ ان دنوں وہ سریش بھگت کی فلم ’’اے اسٹریج لو اسٹوری‘‘ میں کام کر رہی ہیں، لیکن سریش کو ریا کے ساتھ کام کرنے میں کافی پریشانیوں سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ ریا نے ان سے تیس لاکھ روپے کی ڈریس کی ڈیمانڈ کی تو انھوں نے انکار کر دیا۔ اس پر ریا ناراض ہو کر شوٹنگ درمیان میں ہی چھوڑ کر چلی گئیں۔ اس فلم کی شوٹنگ گزشتہ سال پوری ہونی تھی، لیکن نہیں ہو سکی۔ ریا نے سریش کے خلاف سنے اینڈ ٹی وی آرٹسٹ ایسو سی ایشن میں شکایت بھی کی، لیکن ایسو سی ایشن آف موشن پکچرس اینڈ ٹی وی پروگرام نے کہا کہ ریا نے ان کے ساتھ بدتمیزی کی ہے۔ یہاں تک کہ اسے ڈپلی کیٹ کے سہارے اپنی فلم مکمل کرنی پڑی اور اب وہ ڈبنگ آرٹسٹ کی تلاش میں ہیں، جو ریا کے مکالمے بخوبی ادا کر سکے۔ ہو سکتا ہے یہ سب ریا نے اس لئے کیا ہو کہ اگر فلم فلاپ ہو بھی جائے تو قصور انہیں تو دیا جائے گا نہیں۔ وہ یہ زور دے کر کہہ سکتی ہیں کہ اس میں پورا کام ان کا نہیںہے۔ اس واقعہ سے سریش بے حد ناراض ہیں۔ خیر جو بھی ہے، کہیں ریا کو اپنا نخرہ مہنگا نہ پڑ جائے۔
ودیا کی شاندار شروعات
فلم’’ پری نیتا‘‘ سے بالی ووڈ میں اپنے کریئر کا آغاز کرنے والی ودیا بالن کے لئے یہ سال کافی لکی ثابت ہوا۔ اس سال انہیں کافی فلمیں کرنے کا موقع ملا۔ فلم ’’نو ون کلڈ جیسکا‘‘ سے انہیں کافی پذیرائی ملی۔غور طلب ہے کہ وہ جلد ہی ایک اور اسی طرح کی فلم میں آنے کی تیاری کر رہی ہیں۔وہ ملن لوتھریا کی فلم ڈرٹی پکچر میں ایک نئے انداز میں نظر آئیں گی۔اکثر ساڑی پہننے والی ودیا بالن جلد بولڈ کاسٹیوم میں نظر آئیں گی۔ وہ اس چینج ڈریسننگ سینس کو لے کر بے حد پر جوش ہیں۔اس فلم میں ودیا بالن سے کافی بولڈنیس کی امید کی جا رہی ہے۔ ودیا تجرباتی فلموں کے علاوہ بڑے بینروں کے ساتھ کام کر کے بھی نام کما رہی ہیں۔ حال ہی میں وہ ’’تھینک یو‘‘ میں اکشے کمار کی بیوی کیمیو کے رول میں نظر آئیں۔ یہی نہیں، ’’دم مارو دم‘‘ میں وہ ابھیشیک کی بیوی کے رول میں نظر آئیں۔ ودیا نے فلم ’’پا‘‘ میں بھی ابھیشیک کی بیوی کا کردار ادا کیا تھا۔ ’’پا‘‘ فلم ان دونوں ستاروں کے کریئر کی بہترین اور ہٹ فلموں میں شامل ہیں۔اب دیکھنا یہ ہے کہ ان دونوں فلموں سے ’’ودیا‘‘ کا کریئر گراف انہیں کتنی بلندیوں تک پہنچاتاہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *