چھتیس گڑھ: زمین پر سو رہے بھائی بہن کو زہریلا سانپ کے ڈسنے سے موت، سانپ ڈسے تو فوری طور پر اپنائیں یہ اقدام

Share Article

كتور گاؤں میں چار سالہ ریشما اور اس کا سات ماہ کا بھائی راج کمارگزشتہ رات زمین پر سو رہے تھے۔ پولیس کے مطابق اسی دوران بھائی بہن کو زہریلا سانپ ڈس لیا۔

بیجاپور: چھتیس گڑھ میں ایک چونکانے والی معاملہ سامنے آیا ہے۔ ریاست کے بیجاپور ضلع میں زمین پر سو رہے دو معصوموں کو سانپ نے ڈس لیا۔ اس سے بچوں کی موت ہو گئی۔ معلومات کے مطابق ضلع کے كٹرو تھانہ علاقے میں آنے والے كتور گاؤں میں چار سالہ ریشما اور اس کا سات ماہ کا بھائی راج کمار گزشتہ رات زمین پر سو رہے تھے۔ پولیس کے مطابق اسی دوران بھائی بہن کو زہریلا سانپ ڈس لیا۔واقعہ کے بعد لواحقین دونوں بچوں کو لے کر مقامی ہسپتال بھاگے۔ اگرچہ ان کی جان نہیں بچائی جا سکی اور ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دے دیا۔ حکام نے بتایا کہ بچوں کے لاشوں کا پوسٹ مارٹم کراکر رشتہ داروں کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پولیس نے مقدمہ درج کر لیا ہے اور معاملے کی جانچ کی جا رہی ہے۔

آپ کو بتا دیں کہ گزشتہ دنوں چھتیس گڑھ میں ہی اسی طرح کا ایک اور معاملہ سامنے آیا تھا۔ ریاست کے جشپور ضلع کے ایک پرائمری اسکول میں سانپ کے کاٹنے سے دو طالبات کی جمعہ کو موت ہو گئی تھی۔ واقعہ کے بعد دو اساتذہ کو معطل کر دیا گیا۔جشپور ضلع کے حکام نے بتایا کہ ضلع میں باغ تحصیل کے ٹٹكیلا گاؤں کے سرکاری پرائمری شالا میں دو طالبات پازیب (10 سال) اور پاروتی (10 سال) کو زہریلا سانپ نے کاٹ لیا تھا، جس سے دونوں کی موت ہو گئی۔ باغ کے تعلیم افسر ایم آر یادو نے بتایا کہ صبح جب تیسری جماعت کی دونوں اسکول میں تھیں تب انہیں زہریلا سانپ نے کاٹ لیا تھا۔

Image result for snake

سانپ ڈسے تو اپناے یہ اقدامات
اگر کسی کو سانپ ڈس لے تو سب سے پہلے کسی نئی بلیڈ سے کاٹی ہوئی جگہ پر پلس (+) نشان بناتے ہوئے چیرا لگا دیں اور اس کے اوپر مضبوطی سے رسی یا دھاگے باندھ دیں، تاکہ زہر اوپر نہ چڑھے۔ شکار کو ڈرائیں نہیں اور نہ ہی اسے ڈرنے دیں کیونکہ سانپ کاٹنے کے بعد بہت سے لوگ گھبراہٹ اور جھٹکا کی وجہ سے بھی موت کا شکار ہو جاتے ہیں۔جتنی جلدی ممکن ہو کسی اچھے ڈاکٹر کے پاس لے جائیں اور ممکن ہو تو جس پرجاتیوں کے سانپ نے کاٹا ہے اس کی بھی معلومات دیں۔ ایک بات کا ہمیشہ توجہ رہے کہ سانپ کاٹنے کے بعد کسی نیم حکیم، تانترک-اوجھا کے چکر میں بالکل نہ پڑیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *