چندریان -2 پہنچا چاند کے مدار میں، 7 ستمبر کو اترے گا چندہ ماما کے گھر

Share Article

چندریان -2 منگل کی صبح9بج کر 02 منٹ پر چاند کے مدار میں داخل ہوگیا۔ بھارتی خلائی تحقیق تنظیم( اسرو) نے آج چندریان -2 کے مائع راکٹ انجن کو داغ کر اسے چاند کے مدار میں پہنچانے کی مہم کو کامیابی کے ساتھ انجام دیا۔ لینڈر کے تمام سسٹم صحیح طریقہ سے کام کر رہے ہیں۔ اس کے بعد 7 ستمبر کو چاند پر فائنل لینڈنگ کی جائے گی۔

اس سے پہلے اسرو نے کہا تھا کہ اس کے بعد جہاز کو چاند کی سطح سے تقریباً 100 کلومیٹر کے فاصلے پر چاند کے قطبوں کے اوپر سے گزر رہی اس آخری مدارمیں پہنچانے کے لئے چار اورآربیٹل پروسس کو انجام دیا جائے گا۔ خلائی ایجنسی نے کہا کہ اس کے بعد لینڈر ’وکرم دو ستمبر کو آربٹر سے علیحدہ ہو جائے گا۔

اسرو کے سربراہ کے سیون نے بتایا کہ اگلا اہم قدم دو ستمبر کو ہوگا، جب لینڈر کو آربٹر سے الگ کیا جائے گا۔ تین ستمبر کو تقریبا ًتین سیکنڈ کا ایک چھوٹا سا عمل ہو گا، تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ لینڈر کے تمام سسٹم صحیح کام کر رہے ہیں۔ اس کے بعد سات ستمبر کو فائنل لینڈنگ کی جائے گی۔ اسرو کے سربراہ کے سیون نے منگل کے روز بتایا کہ سات ستمبر کو صبح ایک بج کر 55منٹ پر لینڈر چاند ساؤتھ پول کی سطح پر لینڈ کرے گا۔ چاند کی سطح پر نرم لینڈنگ کرنے کے عمل کو شروع کرنے سے پہلے لینڈر سے متعلق دوآربیٹل پروسس کو انجام دیا جائے گا۔

واضح ہو کہ چندریان -2 نے 22 جولائی کو لانچنگ کے بعد سب سے پہلے اپنے ایل آئی 4 کیمرے سے زمین کی تصاویربھیجی تھیں۔ بھارتی خلائی تحقیق تنظیم کے سب سے اہم پروجیکٹ چندریان -2 کا سفر پیر کو دن کے 2 بج کر 43 منٹ پر شری ہری کوٹا کے ستیش دھون خلائی مرکز سے شروع ہوا تھا۔ چندریان -2 مشن کی لانچنگ کی تاریخ پہلے 15 جولائی تھی۔ بعد میں اسے 22 جولائی کو شروع کیا گیا تھا۔ مشن کی لانچنگ کی تاریخ پہلے آگے بڑھانے کے باوجود چندریان -2 چاند پر مقررکردہ تاریخ سات ستمبر کو ہی پہنچے گا۔ منگل کے روز چندریان -2 نے چاند کے مدار میں کامیابی سے داخلہ حاصل کر لیا ہے۔ اسرو کا چندریان -2 منگل کی صبح چاند کی مدار میں قائم ہو گیا۔ اس طرح خلائی شعبہ میں بھارت نے بہت بڑا مقام حاصل کر لیا ہے۔ اسرو کے مطابق چندریان -2 کے تمام سسٹم بالکل صحیح طریقے سے کام کر رہے ہیں۔

اسرو نے کہا کہ اس خصوصی پروگرام کا دورانیہ 1738 سیکنڈ کا تھا جس میں چندریان -2 کامیابی چاند کے مدار میں داخل ہو گیا۔یہ مدار 114 کلومیٹر ضرب 18072 کلومیٹر کاہے۔ اس کے بعد، چندریان -2 کو کئی مدار میں داخل کرانے کے بعد، چاند کی سطح سے تقریباً 100 کلومیٹر دور قمری قطبوں سے گزرتے ہوئے اس کی آخری مدار میں داخل کرانا ہوگا۔ خلائی جہاز پر بنگلور واقع اسرو ٹیلی میٹری ، ٹریکنگ اور کمانڈ نیٹ ورک واقع مشن آپریشنز کمپلیکس (ایم او ایکس) کے ذریعہ بنگلورو کے پاس بیلالو واقع انڈین ڈیپ اسپیس نیٹ ورک (آئی ڈی ایس این) اینٹینا کی مدد سے نگرانی کی جا رہی ہے۔ چندریان -2 بھارتی جیوسنکرونس سیٹلائٹ لانچ وہیکل مارک۔ III (جی ایس ایل وی -ایم کے III)کے ذریعہ 22 مئی کو لانچ کیا گیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *