دہلی میں انشن پر چندرا بابو نائیڈو، حمایت دینے پہنچے راہل گاندھی اور ڈاکٹر منموہن سنگھ

Share Article

چندرا بابو نائیڈو صبح آٹھ بجے سے دہلی کے آندھرا بھون میں بھوک ہڑتال پر بیٹھے ہوئے ہیں۔ وہ رات آٹھ بجے تک یہاں بیٹھیں گے۔ اس کے بعد کل یعنی 12 فروری کو وہ صدر رام ناتھ كووند کو ایک میمورنڈم بھی سوپیںگے۔ راہل گاندھی نے ان کی حمایت کی ہے۔

 

تیلگو دیشم پارٹی TDP کے سربراہ اور آندھرا پردیش کے وزیر اعلی چندرا بابو نائیڈو نے اس ریاست کو خصوصی درجہ دلانے کا مطالبہ لے کر دہلی پہنچ گئے ہیں، جہاں آندھرا عمارت میں ایک روزہ بھوک ہڑتال پر بیٹھ گئے ہیں۔ نائیڈو کے اس بھوک ہڑتال کانگریس سمیت دوسرے غیر این ڈی اے پارٹیوں کی حمایت ملنے لگا ہے۔سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ سمیت کانگریس صدر راہل گاندھی نے دھرناوالی جگہ پر پہنچ کر نائیڈو کا مطالبہ کی حمایت کی۔

لکھنؤ میں پرینکا گاندھی سنگ روڈ شو کے لئے روانہ ہونے سے پہلے کانگریس صدر راہل گاندھی نے آندھرا عمارت پہنچ کر ٹی ڈی پی سربراہ چندرا بابو نائیڈو کو حمایت دی۔ اس دوران راہل گاندھی نے کہا کہ آندھرا کو خصوصی ریاست کا درجہ دیا جائے۔انہوں نے یہاں بھی رافیل کا مسئلہ اٹھایا اور کہا کہ پی ایم مودی نے آندھرا کے عوام کا پیسہ چراکر انل امبانی کو دے دیا۔ اس دوران انہوں نے کہا کہ ہم سب ایک ساتھ کھڑے ہیں اور نریندر مودی اور بی جے پی کو هرائیںگے۔ ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی کہا کہ پی ایم مودی عوام سے کیا گیا وعدہ پورا کریں۔دوسری طرف ڈاکٹر منموہن سنگھ نے بھی مودی حکومت سے مطالبہ کیا کہ آندھرا سے کیا گیا وعدہ نبھایا جائے۔ اس سے پہلے پیر کی صبح جب نائیڈو نے بھوک ہڑتال شروع کی تو اس سے پہلے صبح ایک شخص نے آندھرا عمارت کے باہر خود کشی کر لی۔ یہ شخص نائیڈو کی ریاست آندھرا پردیش کا ہی رہنے والا بتایا جا رہا ہے۔لاش کے پاس ملے سوسائڈ نوٹ میں لکھا ہے کہ ان کی مالی حالت کافی خراب ہے۔ معلومات یہ ہے کہ یہ شخص آندھرا پردیش سے ہی دہلی آیا۔

 

 

آندھرا کو خصوصی درجہ دلانے اور ریاست تنظیم نو ایکٹ، 2014 کے تحت مرکز کے وعدوں کو پورا کرنے کی مانگ کو لے کر وہ یہاں آندھرا عمارت پر ایک روزہ بھوک ہڑتال کر رہے ہیں۔ان کے ساتھ پارٹی کے تمام لیڈر بھی موجود رہیں گے۔ بھوک ہڑتال سے پہلے ناڈيو نے راج گھاٹ جا کر بابائے قوم مہاتما گاندھی کو خراج عقیدت پیش کی۔

 

 

 

چھوڑ دیا تھا مودی حکومت کا ساتھ
ٹی ڈی پی ریاست کی تقسیم کے بعد آندھرا پردیش سے کئے گئے ظلم کی مخالفت کرتے ہوئے گزشتہ سال بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی زیر قیادت NDA سے باہر ہو گئی تھی۔ ٹی ڈی پی کی جانب سے جاری بیان نے کہا گیا ہے کہ نائیڈو پیر کو صبح آٹھ بجے سے رات آٹھ بجے تک آندھرا بھون میں بھوک ہڑتال پر رہیں گے۔ وہ 12 فروری کو صدر رام ناتھ كووند کو ایک میمورنڈم بھی سوپیںگے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *