دنیابھرمیں دیکھا گیاصدی کا سب سے طویل چاندگرہن

Share Article
moon-lunar-eclips
صدی کا سب سے طویل چاندگرہن ملک اوردنیابھرمیں دیکھا گیا۔یہ چاندگرہن 27جولائی کورات 11:54سے شروع ہوکر اگلے دن 28جولائی صبح 3:49تک رہا۔اپنے مختلف مرحلوں کے دوران چاندگرہن کی کل 3گھنٹے 55منٹ رہے۔امریکی انترک ایجنسی ناسا کا دعویٰ ہے کہ یہ 21ویں صدی کا سب سے طویل چاندگرہن رہا۔ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ گرہن افریقہ سے مشرقی وسطی تک، یورپ، روس، انڈیا، پاکستان اور آسٹریلیا میں دکھائی دیا۔دنیا بھر میں لوگوں نے اکیسویں صدی کے طویل ترین اور ’خون رنگ‘ کہلانے والے چاند گرہن کا نظارہ کیا۔چاند گرہن کے دوران زمین چاند اور سورج کے درمیان آ جاتی ہے۔
اگرچہ چاند براہ راست سورج کی روشنی شے نہیں چمکتا تاہم زمین کے کناروں سے چھن کے آنے والی روشنی اسے اندھرے میں ڈوبنے نہیں دیتی۔ اس کی وجہ سے چاند کا رنگ نارنجی، بھورا یا سرخ ہو جاتا ہے۔
ماہرین علم نجوم کے مطابق سال کا دوسرا چاند گرہن تھا۔بتادیں کہ سال 2018کا پہلا چاندگرہن 31جنوری کودکھائی دیا تھا۔بہرکیف 27جولائی کو چاند گرہن ایشیا، یورپ، افریقہ، آسٹریلیا سمیت دنیا بھر میں دیکھاگیا۔آپ کوبتادیں کہ اس سال پانچ گرہن ہوں گے، جس میں تین سورج گرہن اوردوچاند گرہن ہیں۔ 27جولائی کوسال 2018کا دوسرا چاندگرہن ہے۔بہرکیف بتایاجاتاہے کہ سال 2001 سے اب تک کا سب سے طویل مکمل چاند گرہن ہوگا بلکہ اگلے 82 برسوں یعنی 2100 تک اتنا طویل مکمل چاند گرہن دوبارہ نہیں ہوگا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *