زکوٰۃ کی حقیقت و فرضیت

محمد ظفرالدین برکاتی
زکوٰۃ عربی زبان کا لفظ ہے، جس کے معنی ہیں پاکیزگی، زیادتی، بڑھوتری، نیکی اور صلاح۔ اسی لیے قرآن حکیم میں مختلف مقامات پر اسے مختلف معنوں میں استعمال کیاگیا ہے۔ تزکیۂ نفس بھی اسی سے آتا ہے۔ حاصل یہ کہ زکوٰۃ دینے کے بعد مال و دولت میں پاکی حاصل ہوتی ہے اور مزید اضافہ کی امید بڑھ جاتی ہے۔ دنیا میں اس طرح سے کہ مال میں برکت ہوتی ہے اور آخرت کے لحاظ سے اس طرح کہ چوں کہ اس مال سے نیکی اور صلاح کا کام لیا گیا ہے، اس لیے بہتر انجام کی گارنٹی ہوجاتی ہے اور جس کو زکوٰۃ دی جاتی ہے، اس کی ضرورت کی تکمیل ایک اجر اضافی ہے، جس کی خوشی اور ہدیۂ تشکر

Read more

اللہ کی میزبانی کا دن ہے عید

وسیم احمد
شوال المکرم کی پہلی تاریخ یعنی یوم عید کے ساتھ گرچہ کوئی تاریخی واقعہ جڑا ہوا نہیں ہے،اس کے باوجود اس دن کی جو اہمیت ہے اس سے کوئی انکار نہیں کرسکتا۔عام طور پر ہر مذہب و ملت میں تہواروں کو کسی واقعے کے ساتھ جوڑا جاتا ہے اور اسی واقعے کی نسبت سے اس دن کو بطور یادگار منایا جاتا ہے،لیکن عید کا دن ان سب سے الگ خالص مذہبی اور روحانی تہوار ہے، جو اس لئے منائی جاتی ہے کہ بندے نے ایک مبارک مہینہ، ماہ رمضان کو بحسن و خوبی گزار لیا ہے اور شکرانے کے طور پر عید منا رہا ہے۔ اس طرح دیکھا

Read more

ایمان بالغیب اور روزہ کی اصل حکمت

رضوان عابد
یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ خدا کا کلام ہے) خدا سے ڈرنے والوں کے لیے ہدایت ہے جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے، اس میں سے خرچ کرتے ہیں اور جو کتاب (اے محمدؐ) تم پر نازل ہوئی اور جو کتابیں تم سے پہلے (پیغمبروں) پر نازل ہوئیں سب پر ایمان لائے اور آخرت کا یقین رکھتے ہیں۔ یہی لوگ اپنے رب کی طرف سے ہدایت پر ہیں اور یہی لوگ فلاح و نجات پانے والے ہیں۔‘‘(سورۃ البقر آیت 1تا 5)

Read more