حوصلہ بلند ہو تو مسلم لڑکیاں بہت آگے جا سکتی ہیں

میں نے ایم ایس سی علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے کیا۔ ایم ایس (سائنس ایجوکیشن) فلوریڈا اسٹیٹ یونیورسٹی ( امریکہ)سے، بی ایڈ (سی آئی ای)یونیورسٹی آف دہلی اور پی ایچ ڈی جامعیہ ملیہ اسلامیہ نئی دہلی سے کیا۔ فلبرائٹ ایکس چینج ٹیچر کی حیثیت

Read more

اف! اتنی شرائط : مسلم طلبہ کو اسکالرشپ ملے تو کیسے؟

وسم احمد
ہندوستان میں آج بھی 41 فیصد سے زائد آبادی غربت کی زندگی گزارنے پر مجبور ہے اور خواندگی کی صورت حال بھی ابتر ہے ۔ مردوں میں 82.14 اور خواتین میں 65.46 فیصدکا اوسط ہے ۔کسی بھی ملک میں اس طرح کی صورت حال جہالت اور بچہ مزدوری جیسے حالات پیدا کرتی ہے۔ایسی صورت حال سے نمٹنے کے لئے تعلیمی اسکالر شپ ایک ہتھیار کی حیثیت رکھتی ہے۔ تعلیمی اسکالر

Read more

منترالیہ میں آگ سازش یا حادثہ

پروین مہاجن
ممبئی کے لوگ اس وقت حیران رہ گئے جب انہیں وزارت میں آگ لگنے کی خبر ملی۔ سکریٹریٹ یعنی سرکار کا گھر، جس کی تزئین کاری پر کروڑوں روپے خرچ کیے گئے تھے لیکن ایک چنگاری سے پیدا آگ نے سب کی نظروں کے سامنے بالائی منزلوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ اس سے دفتروں میں بیٹھے وزیر اعلیٰ ، نائب وزیر اعلیٰ سمیت دیگر وزیروں کے دربار میں خلل پڑا اور ان کو بھاگ

Read more

راجستھان میں بابوئوں کی قلت

دلیپ چیرین
راجستھان میں بابوئوں کی قلت پیدا ہو گئی ہے۔ ساتھ ہی اسٹیٹ ایڈمنسٹریٹو سروس کے افسر اس بات سے خفاہیں کہ راجستھان کی گہلوت حکومت ان کی ترقی نہیں کر رہی ہے۔ راجستھان میں آئی اے ایس افسروں کے 296عہدے ہیں، لیکن ان میں سے ایک تہائی خالی پڑے ہیں۔ یہی نہیں، ایک درجن سے زائد آئی اے ایس افسران اس سال رٹائرہونے والے ہیں۔ اس وجہ سے صورتحال مزید خراب ہو گئی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ گزشتہ 17سالوں سے راجستھان ایڈمنسٹریٹو سروس کے ایک بھی افسر کو آئی اے ای

Read more

وہ صحافی جنھوں نے جمہوریت کا خون کیا

ڈاکٹر منیش کمار
چوتھی دنیا کو کچھ ایسی دستاویزات ملی ہیں، جن سے کئی نامور اور معززصحافیوں کے چہرے بے نقاب ہو گئے۔ان دستاویزوں سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ ان عظیم صحافیوں نے نہ صرف صحافت کو شرمسار کیا ہے، بلکہ انھوں نے اپنے کارناموں سے ملک میں جمہوریت کا قتل کرنے والی طاقتوں کو تقویت پہنچانے کا کام کیا ہے۔یہ دستاویز بتاتی ہیں کہ کس طرح ملک کے نامور اور معزز صحافیوں نے حکومت کی تاناشاہی کی پالیسیوں کو جائز قرار دیا اور اس کے عوض رقم وصول کی۔ہم اس شمارے میں ان صحافیوں کے نام، ان کے

Read more

الیکٹرونک میڈیا: ایک خوبی، ہزار خامی

پہلے میڈیا غیر جانبدار ہوتا تھا۔ذات پات، مذہب اور اونچ نیچ کا کوئی مسئلہ نہیں تھا۔ اب میڈیا اور خاص طور سے الیکٹرانک میڈیا نے فرقہ پرستی کا چولا پہن لیا ہے۔ وہ جب چاہے جعلی واقعات کی بنیاد پر کسی کی پگڑی اچھال دے۔ کسی کو دہشت گرد اور دیش دروہی بناکر پیش کردے۔ کوئی حملہ ہو پولس والوں اور ہماری انتظامیہ کو تو اس کی کانوں کان بھنک تک نہیں لگتی، لیکن ادھر حملہ ہوا، کہیں بم بلاسٹ ہوا اور ادھر ہمارے نیوزچینل والے ایکسکلوزو (Exclusive)اور اسپیشل اسٹوری کے نام پرکئی ماسٹر مائنڈ ڈھونڈ لاتے ہیں اور اس پر سنسنی خیز تبصرے شائع کرنے لگتے ہیں۔

Read more

راشدہ حسین سے انٹرویو

راشدہ حسین پرانی دہلی کے اسی خانوادہ سے تعلق رکھتی ہیں، جو علم و ادب اور تہذیب کا ایسا سرچشمہ تھا، جس سے ہر خاص و عام فیضیاب ہوتا تھا۔ خود انہوں نے اردو میڈیم سے تعلیم حاصل کی۔ پرانی دہلی کی تنگ و تاریک گلیوں سے نکل کر وہ آج جس مقام پر ہیں، اس پر ہر مسلمان لڑکی رشک کر سکتی ہے۔ ہمارا مقصد بھی یہی ہے کہ ہم ان مسلمان خواتین سے آپ کی ملاقات کرائیں، جن سے آپ کو عزم و حوصلہ ملے اور آپ کی رہنمائی ہو۔ اسی سلسلے میں گزشتہ دنوں چوتھی دنیا اردو کی ایڈیٹر وسیم راشد نے نیشنل اکیڈمی آف کسٹمز، ایکسائز اینڈ نارکوٹکس کی ڈائریکٹر جنرل، راشدہ حسین (آئی آر ایس) سے گفتگو کی، جس کے اقتباس قارئین کے لیے پیش کیے جاتے ہیں۔

Read more

غلط راہ پر نکلے رام دیو

بابا رام دیو کوئی سیاسی آدمی نہیں ہیں۔ وہ ایک یوگی ہیں۔ پچھلی بار کی رام لیلا میدان کی تحریک ناکام رہی۔ اس ناکامی سے بابا رام دیو نے سبق نہیں لیا۔ وہ پھر اسی راہ پر چل رہے ہیں، ایسے لوگوں سے مل رہے ہیں جن کی فطرت ہی دھوکہ دینے کی ہے۔ پچھلی بار کی تحریک میں سب سے بڑا جھٹکا تب لگا، جب کانگریس نے خفیہ سمجھوتے کی بات عام کردی۔ لوگوں کو یقین نہیں ہوا کہ بابا ایک طرف سرکار کے خلاف اَنشن کر رہے تھے اور دوسری طرف وہ سرکار کے نمائندوں کے ساتھ سمجھوتہ بھی کر رہے تھے۔ حالانکہ اس میں کوئی نئی بات نہیں ہے۔ چھوٹی یا بڑی، زیادہ تر تحریک میں لوگ اس قسم کی حکمت عملی بنا کر چلتے ہیں، تاکہ اَنشن یا تحریک کو ختم کرنے کا راستہ بنا رہے۔ لیکن بابا رام دیو نے جس طرح سے سرکار کے ساتھ سمجھوتہ کیا اور جس طرح سے بات چیت پٹری سے اتر گئی، اس سے یہی ثابت ہوا کہ بابا رام دیو سیاسی فیصلے نہیں لے سکتے اور نہ ہی وہ سیاست دانوں سے نمٹنا جانتے ہیں۔

Read more

کانگریس کی اردو دشمنی سے ختم ہوئے اردو میڈیم اسکول

ڈاکٹر قمر تبریز
اتر ہندوستان جب آزاد ہوا تو، اس وقت ملک میں اردو بولنے والوں کی ایک بڑی آبادی موجود تھی۔ پورے ملک میں اردو میڈیم سے تعلیم فراہم کرنے والے اسکول و کالج موجود تھے۔ آزادی سے قبل سرکاری دفاتر اور عدالتوں تک میں اکثر و بیشتر کام کاج اردو زبان میں ہی ہوا کرتے تھے۔ اس وقت شمالی ہند اور خاص کر اتر پردیش کو اردو کا گہوارہ تصور کیا جاتا تھا، لیکن سردار ولبھ بھائی پٹیل سمیت کانگریس کے زیادہ تر لیڈروں کو اچانک یہ لگنے لگا کہ اردو سے مسلم کلچر کی بو آتی ہے، اس لیے اسے ختم کر دینا چاہیے۔ تعجب تو

Read more

ایک پنچایت جس نے لوگوں کی زندگی بدل دی

نیہا بھٹناگر
گائوں کی ترقی میں پنچایت کا اہم رول ہوتا ہے۔لیکن اکثر یہ دیکھا جاتا ہے کہ پنچایت اپنا رول صحیح طریقے سے نہیں نبھاتی ہے، جس کی وجہ سے لوگوں میں یہ سوچ پیدا ہوگئی ہے کہ پنچایت کی سطح پر کچھ نہیں کیا جا سکتا ہے، لیکن لوگوں کی یہ سوچ گجرات میں پنساری پنچایت کی ترقی کے بارے میں جان کر بدل جائے گی۔پنساری گائوں کی کل آبادی 6000 ہے۔ اس گائوں کی خاص بات یہ ہے کہ گائوں ہوتے ہوئے بھی یہ شہری سہولتوں سے آراستہ ہے۔ اس گائوں میں وہ ساری سہولتیں ہیں،جو شہر میں ہوتی ہیں۔ چاہے لوگوں کو شفاف پانی مہیا کرانے کی بات ہو یا اچھی تعلیم دینے کی یا پھر نالیوں کے بندوبست کرنے کی۔ اس گائوں میں ج

Read more