دہلی کے واقعہ سے سبق لینے کی ضرورت ہے

کمل مرارکا
دہلی میں 23 سال کی ایک لڑکی کے ساتھ ہوئے سنگین حادثہ کے خلاف انڈیا گیٹ، جنتر منتر اور دیگر جگہوں پر لوگ اکٹھا ہوئے۔ لڑکی کے ساتھ ہوئے اس شرمناک واقعہ نے پورے ملک کا دھیان اپنی طرف کھینچ لیا۔ میں جس ایشو پر فوکس کرنا چاہتا ہوں، وہ یہ واقعہ نہیں ہے۔جنسی استحصال کے واقعات ملک کے کئی حصوں میں وقت بوقت ہوتے رہتے

Read more

اقلیتوں پر کہاں خرچ ہو رہے ہیں پیسے، نتیش حکومت بتانے میں ناکام

اشرف استھانوی
بہار کی نتیش حکومت بھلے ہی ’نیائے‘ کے ساتھ ’وِکاس‘ یعنی انصاف کے ساتھ ترقی کے نام پر ہر فرقہ اور طبقہ کو ترقی کے یکساں مواقع فراہم کرانے اور ریاست کی مربوط ترقی کے لیے سب کو ساتھ لے کر چلنے کا دعویٰ کرتے ہوئے نہیں تھکتی ہو، مگر اپوزیشن اور مسلم فلاحی تنظیموں کے علاوہ ذمہ دار اور سیکولر میڈیا کی طرف سے حکومت کے اس دعوے کو لگاتار چیلنج کیا جا تا رہا ہے اور حقائق و اعداد و شمار کا آئینہ دکھا کر، خاص کر اقلیتی فلاح

Read more

بلاول بھٹو! ایک نیا بھٹو

(اعجاز حفیظ (پاکستان
بھٹو صاحب اپنی شہادت کے بعد بھی ہماری سیاست کا مرکزی کردار ہیں ۔مجھے یہ بھی کہنے دیجئے کہ گڑھی خدا بخش قبرستان آج بھی پاکستان کا سب سے بڑا ’’سیاسی ایوان ‘‘ ہے ۔قارئین کو یہ بھی بتاتے چلیں کہ اُن کا مزار تاج محل سے ملتا جلتا ہے ۔دور سے رات کے وقت روشنی میں تو بالکل ویساہی دکھائی دیتا ہے ۔ وہ دن آج بھی اچھی طرح سے یاد ہیں کہ جب ہم ڈکٹیٹر ضیا ء کے ڈریکولین مارشل لاء کے دنوں میں بھٹو صاحب کی برسی پر وہاں جایا کرتے تھے ۔ اُس وقت مزار صرف ایک قبر کی صورت میں ہوا کرتا تھا۔

Read more

ہم کیسا سماج بنا رہے ہیں؟

کمل مرارکا
پچھلے کچھ ہفتہ سے پورے ملک کا دھیان دہلی میں ہوئے عصمت دری کے حادثہ پر مرکوز تھا۔ یہ صرف ایک عصمت دری نہیں تھی، بلکہ ایک ایسا دردناک حادثہ تھا، جس نے ہر کسی کے ضمیر کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا۔ حالانکہ ان سب کے بیچ کچھ ایسے ایشو ہیں، جن

Read more

نئی تحریک کی راہ پر ہندوستان

میگھناد دیسائی
تیونس میں تحریک کی شروعات گلیوں میں سامان بیچنے والے ایک تاجر کی بے عزتی کے سبب ہوئی تھی۔ کیا ہندوستان میںبھی سماجی اور سیاسی زندگی میں اسی طرح کی تحریکیں شروع ہو گئی ہیں؟ ہندوستان کے مختلف شہروں میں جو غم و غصہ ہے اور مظاہرے ہو رہے ہیں، وہ نئی نسل کے تاثرات ہیں، جو سیاست کو پہلے کے لوگوں کے نظریے سے الگ دیکھتے ہیں۔ 1960 کی دہائی میں یو کے،

Read more

سبق چھوڑ گیا بھارت بند

ابھیشیک رنجن سنگھ
ملک کے عوام نے کئی مرتبہ’ بھارت بند ‘دیکھے ہیں۔ لال، ہرے، نیلے، بھگوا اور طرح طرح کے رنگوں کے جھنڈوں تلے کبھی بایاں محاذ، کبھی لوک دل، کبھی بہو جن سماج پارٹی، کبھی بی جے پی تو کبھی کانگریس نے سرکار کی عوام مخالف پالیسیوں کے خلاف عوام کو متحد کرنے کے لیے بند کا اعلان کیا۔ گزشتہ کچھ برسوں پر غور کریں تو ہر سال کسی نہ کسی ایشو پر سیاسی پارٹیوں کے ذریعہ ’بھارت بند‘ کیا گیا، راجدھانی دہلی اس کی گواہ ہے۔ اس بند میں عوام کی حصہ داری بھلے ہی نہ رہی ہو، لیکن سیاسی پارٹیوں کے لیے’ بھارت بند‘ کا اہتمام کسی اہم دستاویز کی طرح ہے۔ دہلی میں ایک طالبہ کے ساتھ چلتی بس میں ہوئی اجتماعی عصمت دری کے خلاف

Read more

امن کی نوی دیا طوفان کا پیش خیمہ؟

محمد ہارون
ایک کامیاب ترین گرمائی سیاحتی سیزن کے بعد اور سرمائی سیاحتی سرگرمیوں کے بیچ، وادیٔ کشمیر ایک بار پھر احتجاج کا منظر پیش کرتی دکھائی دے رہی ہے۔ نہ صرف احتجاج، بلکہ تشدد کی ایک لہر بھی حالیہ ایام میں دیکھنے کو ملی۔ صرف گزشتہ دو تین ہفتوں کے دوران ہی وادی کے مختلف مقامات پر فوج اور ملی ٹینٹوں کے درمیان جھڑپوں میں 9 ملی ٹینٹ مارے گئے، جن میں پانچ مقامی،

Read more

انا حامیوں کا گاندھی میدان بھرنے کا عزم

سروج سنگھ
تیس جنوری کو انا ہزارے کی پٹنہ میں ہونے والی ریلی کو لے کر پورے بہار میں زبردست جوش و خروش کا ماحول ہے۔ پٹنہ میں ہونے والی اس ریلی کے رہنما جنرل وی کے سنگھ کے دو روزہ پٹنہ دورے سے تو کارکنان کا حوصلہ اتنا بڑھ گیا ہے کہ ہر کوئی انا کی ریلی میں آنے کی بات کرنے لگا ہے۔ جنرل وی کے سنگھ کے دورے سے سب سے بڑی بات یہ ہوئی کہ انا ہزارے کا خیرخواہ ہر

Read more

اکھلیش کے وعدوں کے پورا ہونے کے منتظر اتر پردیش کے مسلمان

ایس اے بیتاب
اتر پردیش میں سماجوادی پارٹی کی سرکار جس وقت پوری اکثریت کی طرف بڑھ رہی تھی، صوبے میں جرم اور مجرموں کے بڑھنے کی لگاتار خبر آنے لگی تھی۔ سرکار بننے سے لے کر آج تک اترپردیش میں تقریباً ایک درجن کے قریب فرقہ وارانہ فساد ہوچکے ہیں۔ ان فرقہ وارانہ فساد کی اصل وجہ کیا ہوتی ہے، یہ کوئی نہیں بتاتا۔ کہیں گئوکشی کی واردات تو کہیں چھیڑچھاڑ تو کہیں بغیر کسی بات

Read more