کرپشن کو ختم کرنا نہایت ضروری

میر شاہ حسین سنبھلی
بات چاہے سائنسی و تکنیکی ترقی کی ہو یا میدان معاشیت میں ترقی کی یا پھر کثرتِ آبادی کی، کسی بھی زوایے سے دنیا کے نقشے پر نظر آنے والے سات بڑے ممالک کی فہرست مرتب کی جائے تو ان سات ممالک میں ہندوستان کا نام ضرور آئے گا، اور اگر کرپشن کا تذکرہ کیا جائے تو دنیا کے اس وقت سب سے زیادہ کرپشن والے ممالک میں بھی ہندوستان ساتویں نمبر پر ہے ۔ یہ ایک ریڈیو سروے ہے۔ آج پورے ملک میں یہ بات عوام کو سوچنے کے لیے مجبور کر رہی ہے کہ آخر ترقی کے اس دور میں ہم کس راہ پر جا رہے ہیں۔ ہم

Read more

مسجدوں اور بستیوں کو بچانے میں ناکام وقف بورڈ

فیروز بخت احمد
ہند پیمانہ پر وقف کی چار لاکھ ایکڑ سے بھی زیادہ زمین ہے اور تین لاکھ سے بھی زیادہ وقف املاک کی کاغذات میں رجسٹری موجود ہے۔ علاوہ ازیں اگر ہم انٹرنیٹ پر جائیں تو پتہ چلے گا کہ ہندوستان میں وقف کی 375 ہزار کروڑ (اصل اعداد و شمار اس سے کم سے کم دس گنا زیادہ ہوںگے) املاک موجود ہے جس کو مختلف انداز سے خورد برد کیا جا رہا ہے۔ ابھی حال ہی میں دہلی کے ایک انگریزی جریدہ نے اپنے ایک مفصل مضمون میں اس بات کا انکشاف کیا کہ وقف کی جائداد جو غرباء یتامیٰ و مساکین کی جائداد ہے، اللہ کی جانب سے دی گئی جائداد ہے، اس کا بڑی بے رحمی سے تیا پانچہ

Read more

ایسے ختم ہوئی انا کی بھوک ہڑتال

سیاست بڑی پیچیدہ چیز ہے اور اس سے بھی پیچیدہ ہیں ہمارے سیاستداں۔ یہ جو سوچتے ہیں، وہ بولتے نہیں ہیں اور جو بولتے ہیں، وہ کبھی کرتے نہیں ہیں۔ حکومت نے جن لوک پال بل کو پھر سے الجھا دیا ہے۔ میز تھپ تھپا کر ممبران پارلیمنٹ اور سیاسی جماعتوں نے بتا دیا کہ جمہوریت میں رائے عامہ کی کو

Read more

کیسے گھٹے گا سرکاری خرچ

دلیپ چیرین
وزیر خزانہ پرنب مکھرجی اِن دنوں کافی پریشان ہیں۔ ان کی پریشانی کی وجہ حزب اختلاف نہیں، بلکہ بڑھ رہا سرکاری خرچ ہے۔ انہوں نے مرکزی حکومت کی سبھی وزارتوں کے لیے ایک سرکولر بھی جاری کیا ہے، جس میں فضول خرچی پر دھیان دینے کی ہدایت دی گئی ہے۔ سال 2008-2009 میں ہونے والے کل سالانہ خرچ کے مقابلے موجودہ مالی سال زیادہ خرچیلا ثابت ہو رہا

Read more

سارا مال لوٹ کے حکومت اب کہتی ہے مسلمان پسماندہ ہیں

ڈاکٹر قمر تبریز
ہندوستان پر مسلمانوں نے تقریباً آٹھ سوسالوں تک حکومت کی۔ اس دوران انہوں نے کہیں پر قلعے تعمیر کروائے، تو کہیں پر سرائے خانے، کہیں پر مسجدیں بنوائیں تو کہیں پر باولیاں۔ ہندوستان کو انہوں نے ہمیشہ اپنا گھر سمجھا۔ یہ مسلم حکمراں ہندوستان کے باہر سے آئے ضرور تھے، لیکن ایک بار یہاں پر سکونت اختیار کرنے کے بعد انہوں نے خود کو ہندوستانی کہلانا ہی زیادہ پسند کیا۔

Read more

انا کی بھوک ہڑتال : ایک کہانی بہتر مینجمنٹ کی

ششی شیکھر
ذرا سوچئے، آخر ایک فقیر کی تحریک کی آگ اتنے کم وقت میں پورے ملک میں کیسے پھیل گئی؟ کیوں حکومت کو بار بار جھکنا پڑ رہا ہے؟ کیوں پولس والوں کے تیور بھی انا کی تحریک کے دوران نرم ہو جاتے ہیں؟ کیوں وزیروں تک کی بولتی بند ہو جاتی ہے؟ ظاہر ہے، ملک گیر تحریک چلانے کے لیے جتنی ضرورت جذبے کی ہوتی ہے، اتنی ہی ضرورت وسائل کی ہوتی ہے۔پھر وسائل مہیا کرنے کے لیے پیسوں اور ایسے لوگوں کی بھی ضرورت ہوتی ہے جو تحریک کو کامیاب بنانے کے لیے جی جان سے محنت کریں۔ ٹیم

Read more

شہلامسعود: آر ٹی آئی کا ایک اور سپاہی شہید

پرمود بھارگو
بدعنوانی کی بھانڈا پھوڑ کوششیں جان لیوا ثابت ہو رہی ہیں۔بھوپال کی آر ٹی آئی کارکن شہلا مسعود کے قتل سے پورے ملک میں ’حق اطلاع قانون ‘ کے تحت جانکاریاں لینے کا جوکھم اٹھا رہے کارکن حیران ہیں۔اس قانون کے نافذ ہونے کے بعد سے لے کر اب تک 17 آر ٹی آئی کارکنوں کو موت کے گھاٹ اتارا جا چکا ہے۔گزشتہ 6 مہینوں میں ہی چھ کارکن قتل کر دیے گئے۔اس کا مطلب یہ ہوا کہ ہر ماہ ایک کارکن کا قتل ہوا ہے۔ شہلا کے قتل کے بعد سامنے آئی جانکاریوں سے پتہ چلا کہ انہوں نے تقریباً ایک ہزار درخ

Read more

دوستانہ کیوں ٹوٹ گیا

سروج سنگھ
کہتے ہیں پرانے دوست سے دور ہونے کا فیصلہ کرنا کافی مشکل ہوتا ہے۔ وہ بھی ایے دوست سے، جس کے ساتھ کچھ خواب 17 سال پہلے بہار کو آگے لے جانے کے لئے دیکھے گئے ہوں۔ وقت بدلا، حکومت بدلی لیکن نتیش کمار کے دوست ڈاکٹر شمبھو شرن شریواستو کو لگا کہ تمام دعوئوں کے باوجود وہ خواب آج بھی تصور کے گھیرے میں ہی قید ہیں۔ بد حال بہار کی بہبود کے یہ سپنے زمین پر نہیں اتر پائے۔ قانون سازکونسل اور جنتا دل یونائٹیڈ کی ممبر شپ سے استعفی دے کرشمبھو شرن شریواستو سپنوں کے بکھرنے کے

Read more

بے روزگار اساتذہ کا آن لائن ہجوم

سلمان فیصل
اگست کے پہلے ہفتے میں ایک بار پھر بے روزگار کا اساتذہ کا ہجوم نظر آیا۔ مگر اس بار یہ بے بس اور حکومت کے قانونی داؤ پیچ میں الجھے بے روزگاراساتذہ اسکولوں میں نہیں بلکہ دہلی کے ڈائریکٹوریٹ آف ایجوکیشن کی ویب سائٹ www.edudel.nic.in پر گیسٹ ٹیچر کی اسامی کے لیے اپنی امیدواری ثابت کرتے نظر آئے۔ یہ گیسٹ ٹیچر کی تقرری بھی صرف سات مہینے کے لیے ہے۔ یعنی اگست سے فروری تک کے لیے۔ دہلی کے ڈائریکٹوریٹ آف ایجوکیشن نے اپنے ماتحت دلّی میں چلنے والے مختلف اسکولوں میں مختل

Read more