تبدیلی کی دوڑ میں کانگریس خود کو بدلے

میگھناد دیسائی
نواپریل کو جب انا ہزارے نے اپنی بھوک ہڑتال ختم کی تب جمہوری حکومت کے ذریعہ مشترکہ کمیٹی تشکیل کرنے کے تاریخی فیصلہ پر ہر کسی کو فخر محسوس ہو رہا تھا۔مشترکہ کمیٹی ایک نئی سوچ تھی جس نے سول سوسائٹی کو آواز دی، لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ اس کے بعد دونوں فریقوں (جوائنٹ کمیٹی میں حکومت اور سول سوسائٹی کے ممبران) نے جو کچھ بھی کیا وہ مایوس کن رہا۔ بلا وجہ، 15اگست کی تاریخ مقرر کر دی۔ اب ہم دیکھ رہے ہیں کہ کس طرح سے کانگریس نے حملہ کیا اور ہزارے ٹیم کے ممبران کی شبیہ مٹی میں مل رہی ہے۔ ہزارے ٹیم کے ممبران کو لے کر 9اپریل سے پہلے بھی سوال اٹھ رہے تھے۔ یہ شبہ تک ظاہر کیا جا رہا تھا کہ آیا یہ حقیقت میں ایک عوامی تحریک ہے یا محض میڈیا کی وجہ سے جمع ایک مجمع، لیکن جیسے ہی 9اپریل گزری، کانگریس کے اکسانے پر کچھ لوگوں نے بھوشن کے باپ ، بیٹے اور دیگر ممبران پر الزام در الزام عائد کرنے

Read more

بہار مدرسہ بورڈ میں بدعنوانی حکومت کی شہ پر؟

اشرف استھانوی
بہار میںبد عنوانی کے خلاف جنگ کے سرکاری دعوے اور گھن گرج کے درمیان سرکاری کنٹرول والے بہار مدرسہ ایجو کیشن بورڈ میں جس بڑے پیمانے پر بد عنوانی اور لوٹ کھسوٹ کا بازار گرم ہے بورڈ کی تاریخ میں اس کی نظیر نہیں ملتی ہے۔ مگر میڈیا کے لگاتار احتجاج کے باوجود نتیش حکومت نے جس طرح اس حوالے کی طرف سے چشم پوشی کا رویہ اختیار کیا ہے ۔ اس سے اس شبہ کو تقویت ملتی ہے کہ یہ سب کچھ حکومت کی مرضی اور منشا سے مدارس کے تعلیمی نظام کو تباہ کرنے کی غر

Read more

بابوئوں کا بابو

دلیپ چیرین
گزشتہ دنوں ایک پرانے دوست کے پی سنگھ کا دہلی میں انتقال ہو گیا ، جس پر بہت سے سینئر بابوئوں کو صدمہ پہنچا۔ویسے تو کے پی سے پہلے ان کے بہت سے دوست اس دار فانی سے رخصت ہو چکے ہیں ، لیکن ان کی یاد میں منعقد پروگرام میں بڑے بڑے بابو بڑی تعداد میں موجود تھے۔ کے پی خود تو کبھی بیورو کریٹ نہیں رہے، لیکن بابوئوں کی بڑی تعداد، جو دہلی اور خاص طور سے اتر پردیش میں اعلیٰ عہدوں پر فائز رہی، انہیں ہمیشہ یاد کرے گی۔ ہندوستان کے بیوکریٹک بورڈپر جس انداز میں کے پی نے لابنگ کرنے کا کام کیا، وہ آج کل کے لابسٹوں کے لئے ایک خواب ہے۔ویسے تو انھوں نے طویل عرصہ کے لئے برلا، آئی ٹی سی اور سری رام ج

Read more

اتر پردیش میں جل، جنگل اور زمین کی لڑائی

سریندر اگنی ہوتری
سون بھدر، چندولی کے بعد الٰہ آباد منڈل کے کوشامبی، فتح پور اور باندہ منڈل کے چترکوٹ، مہوبہ میں لال سلام کے روپ میں ماؤنواز دستک دینے لگے ہیں۔ چترکوٹ ضلع میں پانی، زمین اور جنگل پر دبنگوں کے قبضے کے سبب حالات خوفناک ہو رہے ہیں۔ حکومت کا کردار بڑے زمیندار کی شکل میں ہو جانے کے سبب ملک خانہ جنگی کی جانب لمحہ بہ لمحہ آگے بڑھ رہا ہے۔ یہ آہٹ بھلے ہی اندھی بہری ہو اور گونگی حکومتوں کی سمجھ میں نہ آئے، لیکن بدامنی سے ہونے والے نقصان کا تصور ہمارے اندر سنسنی پیدا کر دیتا ہے۔ این ڈی اے حکومت نے غیرملکی آقاؤں اور سرمایہ داروں کے دباؤ میں سیلن ایکٹ کو شہری علاقہ میں غیرمؤثر ب

Read more

تعلیم کی طرف گامزن مسلم خواتین

فردو س خان
تعلیم مہذب سماج کی بنیاد ہے۔ تاریخ گواہ ہے کہ تعلیم یافتہ قوموں نے ہمیشہ ترقی کی ہے۔ کسی بھی شخص کی اقتصادی اور سماجی ترقی کے لیے تعلیم بہت ضروری ہے۔افسوس کی بات یہ ہے کہ جہاں مختلف فرقے تعلیم کو اہمیت دے رہے ہیںوہیں مسلم سماج آج بھی اس معاملے میں بے حد پسماندہ ہے۔ہندوستان میں خاص کر خواتین کی حالت بے حد خراب ہے۔سچر کمیٹی کی رپورٹ کے اعداد و شمار بھی اس بات کو ثابت کرتے ہیں کہ دیگر فرقوں کے مقابلے مسلم خواتین اقتصادی، سماجی اور تعلیمی طور پر کافی پچھڑی ہوئی ہیں، لیکن خاص بات یہ ہے کہ تمام مشکلوں کے باوجود مسلم خواتین مختلف میدانوں میں ک

Read more

میرٹھ کا حالیہ فساد ، ہم سب کے لئے لمحۂ فکریہ

اسلم جمشید پوری
انسان نے چاند اور خلا پر اپنی کمندیں ڈال دیں، انسانی کلوز بنالیا، روبوٹ انسانوں کی طرح کام کرنے لگا۔ ہندوستان ترقی کے زینے چڑھتے چڑھتے بعض معاملات میں دنیا کے چار پانچ ممالک میں شمار ہونے لگا۔ کمپیوٹر اور انٹرنیٹ کے عہد میں ہندوستان نے اپنی الگ شناخت قائم کی ہے۔ آئی ٹی میں ہندوستان نے بڑے بڑے ممالک کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ دنیا کا سب سے بڑا جمہوری ملک، دنیا کو امن و پیغام دینے والا ملک، کثرت میں وحدت کا اعلیٰ نمونہ ہندوستان۔ ایک ایسا ملک جہاں مختلف مذاہب، فرقے، لسان، رنگ و نسل کے لوگ آپس میں اتحاد و اتفاق، ہم آہنگی اور یگانگت کے ساتھ صدیوں سے رہتے آرہے ہیں۔ یہ ہندوستان کا روشن چہرہ ہے جو عالمی سطح پر منور ہے۔ ایسے میں ہندو، مسلم فساد، چہ معنی دارد؟ اس دور میں جب کہ ہر شخص اپنی روزی روٹی کمانے کی فکر میں غلطاں ہے۔ اپنی اپنی دنیائیں آبا

Read more

بہار میں بدعنوانی پروار مگر بدعنوانوں سے پیار

اشرف استھانوی
بہار میں نتیش کمار کی قیادت والی این ڈی اے حکومت نے بد عنوانی کو ٹارگٹ بناتے ہوئے اپنی دوسری مدت کار میں ریاست کو بد عنوانی سے پاک کرنے کا عہد کیا ہے۔ اس مقصد کے حصول کے لئے اس نے رائٹ ٹو سروس ایکٹ بنانے اور اسے سختی کے ساتھ نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے، لیکن حالیہ بجٹ اجلاس کے دوران ریاستی قانون سازیہ کے دونوں ایوانوں سے جو بل منظور کرایا گیا ہے اور جتنی آپا دھاپی میں اسے منظوری دلائی گئی ہے اس سے نہ صرف اس معاملے میں حکومت کے غیر سنجیدہ ہونے کا اندازہ ہوتا ہے بلکہ بل کے مشمولات کا جائزہ لینے سے اس بات کا بھی اندازہ ہو جاتا ہے کہ اس سے بد عنوانی کے خاتمہ میں کوئی مدد نہیں

Read more

تبدیلی کی لہر سے پریشان بایاں محاذ

بمل رائے
ریاستی اسمبلی انتخابات کے آخری مرحلہ میں نئے نئے موضوعات کے ذریعہ سیاسی پینترے بازی کے نت نئے روپ دیکھنے کو مل رہے ہیں۔بلیک منی اور بدعنوانی کا ایشو تو پورے ملک میں گرم ہے۔لیکن بنگال میں ہاؤسنگ منسٹر گوتم دیو نے ترنمول پر بلیک منی جمع کرنے کا الزام لگاکر الیکشن مہم کو ایک نئی رنگت دے دی ہے۔یہ اس لیے بھی اہم ہے کیونکہ پارٹی سربراہ ممتا بنرجی پر آج تک بدعنوانی کا کوئی الزام نہیں لگا ہے۔ملک میں بلیک منی کا پتہ لگانے میں بھلے ہی مرکزی حکومت کو پسینے آرہے ہیں لیکن مارکس نواز کمیونسٹ پارٹی نے اس مبینہ بلیک منی کا پتہ اپنے کارکنان کے ذریعہ لگایا ہے۔ہاؤسنگ منسٹر کی باتوں پر یقین کریں تو گزشتہ25ما

Read more

انا کی لڑائی اور سازش کی سی ڈی

پرمود بھارگو
انا ہزارے کی لڑائی طول پکڑتی جا رہی ہے اور یہ ہونا بھی تھا۔ جوائنٹ کمیٹی کے ممبر شانتی بھوشن کے خلاف پہلے جائداد کی خریدوفروخت میں کم اسٹامپ فیس ادا کرنے کا معاملہ اور پھر ایک سی ڈی کے ذریعہ چار کروڑ روپے رشوت لینے دینے کی سازش کا سامنے آنا اس بات کی جانب اشارہ ہے کہ جن لوک پال بل کا مسودہ بغیر کسی روک ٹوک کے اختتام کو نہ پہنچ پائے۔جمہوریت کی عظمت جن طاقتور سیاسی مفاد پرستوں کے لئے ناجائز لوٹ اور کنبہ پروری کا حصہ بن گئی ہے

Read more