بہار میں دھان کی فصل پر سیاست ہورہی ہے

صوبہ بہار کے کسان ان دنوں اپنی قسمت کو کم اور دھان پر ہو رہی سیاست کو زیادہ کوس رہے ہیں۔یہ پہلا سال نہیں ہے جب کسان اپنی رات و دن کی محنت سے پیدا ہوئی دھان کی فصل کو اونے پونے دام پر بیچنے کے لئے مجبور ہو گئے ہیں۔ سرکاری وعدے کچھ تھے اور زمینی حقیقت کچھ اور ہے۔ حد تو تب ہو گئی جب سابق ممبر پارلیمنٹ جگدانند سنگھ نے بھی کہہ دیا کہ اپنی دھان کی فصل کو انہیں بھی اونے پونے دام پر بیچنا پڑا۔ سرکار کی چکنی چپٹری باتیں اور دھان خریدنے والے مافیا کے چنگل میں پھنس کر دھان پیدا کرنے والے کسان خون کے آنسو رو رہے ہیں اوربرسراقتدار اور اپوزیشن آنسو پوچھنے کے بجائے صرف ایک دوسرے پر الزام لگا کر سیاست میں لگے ہوئے ہیں۔

Read more

پٹھان کوٹ دہشت گردانہ حملے کی حقیقت

نارکو پولٹکس اور نارکو ٹیرورزم نے پنجاب کے سرحدی علاقوں کو اپنی گرفت میں لے لیا ہے۔کچھ ہی ماہ قبل گرداس پور کے دینا نگر میں اور اب پٹھان کوٹ میں ہوا دہشت گردانہ حملہ اسی سانٹھ گانٹھ کی منادی ہے۔ واردات کے محض دو دن قبل گرداس پور کے ایس پی کے عہدے سے ہٹایا گیا سلوندر سنگھ اس نکسس کا محض ایک مہرہ ہے ۔پٹھان کوٹ حملے کی گہرائی سے جانچ کر رہی نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے) اس سمت میں بھی ٹھوس طریقے سے آگے بڑھ رہی ہے کہ سلوندر سنگھ جیسے مہروں ک

Read more

اس نظام کی حفاظت کرنا وزیر اعظم کی ذمہ داری ہے

اپنی بات کی شروعات میں جموں و کشمیر کے وزیر اعلیٰ مفتی محمد سعید کے انتقال کی المناک خبرسے شروع کرنا چاہتا ہوں۔وہ کشمیر کے ایک پرانے لیڈر تھے اور جموں و کشمیر کے وزیر اعلیٰ تھے۔ جب دہلی میں وی پی سنگھ وزیر اعظم بنے، تب انھوں نے مفتی محمد سعید کو ملک کا وزیر داخلہ مقررکیا۔ ان کے لےے اور ساتھ ہی کشمیر کے لےے یہ ایک بہت ہی اہم بات تھی، اہم حصولیابی تھی۔ ایک کشمیری کو پورے ملک کا وزیر داخلہ مقرر کیا جانا فخر کی بات تھی او ریہ کشمیری لوگوں کے لےے بہت اہم

Read more

اتر پردیش میں پریشر ہارن شہریوں کو بہرہ بنا رہے ہیں

ایک طرف دہلی سرکار ماحولیات میں بڑھتے خطروں سے نمٹنے کے لئے سڑکوں پر گاڑیوں کی تعداد کم کرنے کی جدو جہد میں لگی ہے تو دوسری طرف اتر پردیش سرکار ماحولیات کی آلودگی میں اضافہ کرنے کے ساتھ ساتھ ساﺅنڈ پولیوشن کو بھی پھلنے پھولنے کا پورا موقع دے رہی ہے ۔ ماحولیاتی آلودگی ہو یا ساﺅنڈ پولیوشن،اتر پردیش کی راجدھانی لکھنو یا دیگر شہروں میں بھی نہ تو عدالتوں کو کوئی فکر ہے اور نہ نیشنل گرین ٹریبونل جیسے اداروں کو۔ پردہ سماعت کو پھاڑنے والے ہارن بجا کر راجدھانی کی سڑکیں روندنے والی گاڑیاں شہر کے لوگوں اور خاص طور پر بچوں کو بہرہ بنا رہی ہیں، لیکن اس پر روک تھام کا کوئی بندوبست نہیں ہے۔ روک تھام کون کرے؟ انتظامیہ اور حکومت کے علمبرداروں کی گاڑیاں ہی شور کررہی ہیں۔ بغیر شور مچائے انہیں لگتا ہی نہیں کہ وہ وی آئی پی ہیں۔ نوابوں کے شہر کے پرانے لوگ ایسے لا پرواہ وی آئی پی ہستیوں کو تہذیب کے شہر کی بد تمیز ہستیاں کہہ کر بلاتے ہیں۔

Read more

ایودھیامدعا بحران نہیں، ایک موقع ہے

آن مائی ٹرمس،ایک خود نوشت ہے،جسے شرد پوار نے حال میںجاری کیا ہے۔یہ خود نوشت ہندوستان کی سیاست، ثقافت اور ملک میںکام کرنے کے طریقے کے بارے میں زیادہ جانکاری دیتی ہے۔پوار کانگریس کے اندر رہے ہوں یا باہر، وہ ہمیشہ ٹاپ پر رہنے میںکامیاب رہے۔ اس کے لےے انھیں اپنے علاقے بارہ متی میںٹھوس بنیاد کا شکریہ ادا کرناچاہےے او راس کے ساتھ ہی ڈلیور کرنے کی ان کی اہلیت کا بھی اس میںبہت بڑا ہاتھ رہا ہے۔اس کتاب میںسب سے بہتر جانکاری بابری مسجد مدعے کے بارے میںدی گئی ہے۔ اتر پردیش اسمبلی انتخاب میںاب بہت کم وقت رہ گیا ہے۔ایودھیامیںشیلانیاس کے لےے پتھر آنے شروع ہوگئے ہیں، اس لےے اس وقت شرد پوارکو پڑھنا کافی مفید ہوگا۔

Read more

ایسے بھی ہوتی ہے مسیحائی

سوا ارب سے زیادہ آبادی والے ہندوستان میںسرکاری طور پر صحت سے متعلق خدمات کی حالت کسی سے پوشیدہ نہیں ہے۔ اول تو ہر جگہ اسپتال نہیں۔ اسپتال ہے تو ڈاکٹر نہیں،ڈاکٹر ہیں تو دواو¿ں او رآلات کا فقدان ہے۔ اگر سب

Read more

جموں وکشمیر کے پرچم کی تکریم کرنے سے بی جے پی کا انکار

جموں و کشمیر میں بی جے پی نے ریاستی پرچم کی تکریم اور اسے ترنگے کی برابری کے سطح کا ماننے سے انکار کرتے ہوئے ایک بار پھر اپنی اتحادی جماعت پی ڈی پی کو پریشانی سے دوچار کردیا ہے۔ جہاں اب ناقدین بی جے پی کے رویے کی مذمت کررہے ہیں وہیں وہ لگے ہاتھوں پی ڈی پی کو بھی اس بات پرطعنے دے رہے ہیں کہ اسی پارٹی نے جموں وکشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کی خواہش رکھنے والی بی جے پی کو ریاست میں اقتدار کی مسند پر بٹھا دیا ہے۔

Read more

دو ہزار سولہ وزیر اعظم کے لئے چیلنج بھرا ہے

2016 کئی معنی میں اہم ہے۔سیاسی، سماجی اور ثقافتی طور پر بھی ۔نئی سرکار آنے کے بعد سے کئی نئے تنازع بھی دیکھنے کو مل رہے ہیں۔آج کل ایک عجیب طرح کا سیاسی ماحول بنتا جارہا ہے۔ کئی طرح کے تنازع سیاسی پارٹیوں میں دکھائی دے رہے ہیں، جن میں سے زیادہ تر بے وجہ ہیں۔ان تنازعات سے نہ تو ملک کا بھلا ہونے والا ہے اور نہ ملک کے کثیر مذہبی و کثیر ثقافتی سماج کا۔ ایسے میں وزیر اعظم نریندر مودی کے لئے نیا سال ایک بڑا چیلنج ہے۔ انہیں آگے آکر مداخلت کرنی ہوگی، ایک حتمی گائڈ لائن دینی ہوگی، جس سے ایک تخلیقی سماج اور ترقی یافتہ ہندوستان کی تعمیر ہوسکے۔

Read more

پہلا پرواسی دیوس، اکھلیش کی پہل پر سرمایہ کاری کے کئی راستے کھلے میک اِن یوپی سے کامیاب ہوگا میک انڈیا

میک اِن یوپی مہم میں ایک ہزار کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کے اعلان کے ساتھ سال 2016 کی شروعات ہوئی۔ ذریعہ بنا اترپردیش میںپہلی بار منعقد ہوا ’اترپردیش پرواسی

Read more