سرکاری اور پارٹی میں دراڑ

وزیر اعظم منموہن سنگھ کو قریب سے جاننے والے اس بات سے بخوبی واقف ہیں کہ وہ جو بات کہتے ہیں، معنی اس کے نہیں ہوتے، بلکہ وہ جو نہیں کہتے ہیں مطلب اُس کا ہوتا ہے۔ گزشتہ سات سالوں کے دوران اگر اس بات سے سب سے زیادہ واسطہ کسی کا پڑا ہے، تو وہ ہیں کانگریس کی صدر سونیا گاندھی۔ حالانکہ منموہن سنگھ نے کبھی

Read more

اتر پردیش کی تقسیم: عوامی امنگ یا سیاسی امنگ کی تکمیل

عابد انور
ہندوستان کو آزاد ہوئے تقریباً 65 برس ہوچکے ہیں، لیکن حقیقی معنوں میں یہاں کے عوام اور سیاسی لیڈروں کا ذہن جمہوری نہیں ہوسکا۔ وہ ہمیشہ اسی تاک میں رہے کہ انہیں کب موقع ملے کہ وہ ہڑپ کرجائیں، خواہ وہ اقتدار ہو، دولت ہو یا کوئی اور چیز۔ محنت کی بجائے شارٹ کٹ اپنانا یہاں کے لیڈروں کاہمیشہ وطیرہ رہا ہے۔ اگر ایک بار اقتدار میں آگئے تو ریٹائرمنٹ کا تو کوئی سوال ہی نہیں پ

Read more

وزیر اعظم صاحب، یہ خاموش رہنے کا وقت نہیں ہے

کمل مرارکا
سپریم کورٹ سے ریٹائر ہوئے جسٹس کاٹجو کو پریس کونسل آف انڈیا کا صدر مقرر کیا گیا۔ پہلے سے ہی یہ شکایت تھی کہ پریس کونسل ایک کمزور ادارہ ہے اور اس کے پاس اختیار اتنے کم ہیں کہ اس کا پریس پر کوئی کنٹرول نہیں ہے۔ جسٹس کاٹجو نے دو سچ باتیں کہہ دیں تو لوگ اچھل پڑے۔ انھوں نے کہا کہ آج کل کے نامہ نگار، صحافی اور پریس میں کام کرنے والے لوگوں کا معیار کافی گر گیا ہے۔ وہ اس دانشورانہ سطح کے نہیں ہیں، جس کی صحافیوں سے توقع کی جاتی ہے۔ اب اس میں غلط کیا ہے ؟ چار سرمایہ دار جو پبلشر ہیں

Read more

یو پی کا آئندہ اسمبلی انتخاب اور مسلمانوں کی صورتحال

ڈاکٹر قمر تبریز
ہندوستان ایک جمہوری ملک ہے۔ اس جمہوری نظام میں عوامی نمائندوں کو عوام کے ذریعے ہر پانچ سال میں ایک بار منتخب کیا جاتا ہے۔ لیکن ہمارے ملک کی بدقسمتی یہ ہے کہ سیاسی نمائندے جب منتخب ہو کر ایوان میں پہنچتے ہیں تو یہ بھول جاتے ہیں کہ انہیں کس نے منتخب کیا ہے۔ وہ عوام کے مسائل کو نظر انداز کرنا شروع کر دیتے ہیں۔ ان پانچ سالوں میں شاید ہی کسی لیڈر کو اتنا وقت مل پاتا ہے کہ وہ اپنے حلقہ انتخاب کا دورہ کرکے وہاں کے مسائل کو جاننے اور پھر انہیں حل کرنے کی کوشش کرے۔ حالانکہ منتخ

Read more

بہار : سیاسی رسہ کشی میں پھنسا اسٹیل پلانٹ

سروج سنگھ
بہار میں مہنار کے سیہدیئی خورد، رامپور کمرکول اور کمرکول بزرگ کے کسانوں نے علاقہ کی ترقی کے لیے چار سال پہلے ایک خواب دیکھا تھا۔ خواب ایسا کہ ان کی کئی پشتیں ان پر ناز کرتیں اور ان کا مستقبل سنور جاتا، لیکن سیاست کی بساط پرپڑے کچھ قدموں نے ان کے خوابوں کو چکناچور کر دیا۔آج یہ کسان اس بات پر افسوس کر رہے ہیں کہ کیوں انھوں نے بوکارو اسٹیل پلانٹ سیل کو پلانٹ لگانے کے لیے زمین دی۔ کسانوں کا المیہ یہ ہے کہ انھوں نے بڑی امیدوں اور بھروسہ سے زمین دی ، لیکن سیل کا پلانٹ نہ جا

Read more

صحافت ماضی، حال اور جسٹس مارکنڈے کاٹجو

محمد فرقان عالم
صحافت ترسیل و ابلاغ کا وہ اہم ترین ذریعہ ہے جس کی حقیقت سے سر موانکار کی گنجائش نہیں ۔ اس کی ہمہ گیریت ، اہمیت و افادیت کا سکہ نہ صرف یہ کہ کسی خاص طبقے ، کسی خاص ملک بلکہ پورے عالم کے دلوں پر اس طرح جما ہوا ہے جس کا ازالہ کسی بڑے ذرائع سے بھی ممکن نہیں ۔ اور ہو بھی کیوں نہ کہ اس کے ذریعے ذہن سازی ، افراد سازی ، ساتھ ہی حقیقت سے آگہی کے وہ مؤث

Read more

مالیگائوں ضمانت پر جشن، سنگین مسائل کا حل نہیں ہے

وصی احمد نعمانی
دوہزار چھ میں مورخہ 8ستمبر کو شب برأت کے موقع پر جب ہندوستان کے مسلمان عبادت میں مشغول تھے، اس وقت مالیگائوں کے قبرستان کے ساتھ حمیدیہ مسجد اور مشاورت چوک میں جو دھماکے ہوئے، اس سانحہ میں37معصوم جان بحق ہوئے اور سینکڑوں بری طرح زخمی ہوئے۔ اے ٹی ایس کے ذریعہ اس واقعہ میں9مسلم ملزم کی حیثیت سے گرفتار کیے گئے اور ان سب پر مقدمہ شروع ہوا۔ ایک سال کے عرصہ میں ہی ایک دوسرا واقعہ پیش آیا۔ اجمیر، حیدرآباد اور سمجھوتہ ایکسپریس میں بم دھماکہ کا واقعہ سرزد کیا گیا۔ ان معاملات کی کڑی میں19نومبر 2010کو سوامی اسیما نند کی گرفتاری عمل میں آئی۔ اور دلی میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ کی عدالت

Read more

اترپردیش اسمبلی انتخابات: مایاوتی کا ماسٹر اسٹروک

ڈاکٹر منیش کمار
ہمارے آئین میں نیا صوبہ بنانے کا ایک طریق کار ہے۔ آئین کے مطابق نیا صوبہ بنانے کا اختیار پارلیمنٹ کے پاس ہے، اگر کسی صوبہ کے علاقہ، سرحد یا نام بدلنے کی تجویز ہے تو ایسے بل کو صدر جمہوریہ پارلیمنٹ میں بھیجنے سے قبل متعلقہ صوبہ کی اسمبلی کو بھیج کر متعینہ مدت کے اندر رائے دینے کو کہیں گے، اور اگر اس متعینہ مدت کے اندر رائے نہیں دی جاتی ہے تو یہ مان لیا جائے گا کہ بل کے بارے میں کوئی اختلاف نہیں ہے۔ صوبہ کی از سر نو تشکیل، تقسیم کی کارروائی شروع کرنے کے لیے متعلقہ صوبہ کی قانو

Read more

ملائم کا مسلم پریم

اجے کمار
اتر پردیشمیں سماجوادی پارٹی کی تین بار سرکار بن چکی ہے۔ تینوں مرتبہ وزیر اعلیٰ کی کرسی ملائم سنگھ کے پاس رہی۔ سماجوادی پارٹی کے صدر ملائم سنگھ یادو کو ان کے قریبیوں کی طرف سے ’دھرتی پُتر‘ کی ڈگری ملی ہوئی ہے۔سیاست کے میدان میں ان کی زمینی طاقت ہمیشہ اپوزیشن کو چاروں خانے چت کرنے والی رہی۔ ملائم ویسے تو بڑے لیڈر ہیں اور انہوں نے کافی م

Read more

جی 20کی اہمیت بڑھ گئی ہے

میگھناد دیسائی
سرد جنگ سے پہلے دنیا دو گروپوں میں تقسیم تھی۔ ایک گروپ امریکہ کا تھا تو دوسرا سوویت یونین کا۔سرد جنگ کے بعد سوویت یونین زوال پذیر ہوا اور دنیا میں ایک ہی عالمی طاقت رہی امریکہ۔ دنیا کے سیاسی فلک پر امریکہ کو ہی برتری حاصل تھی، جو تیسری دنیا کے ممالک کے لئے تشویش کا باعث تھا۔ اسی وجہ سے دنیا میں ملٹی پولر سسٹم کی ضرورت محسوس کی گئی، جس میں تمام ممالک کے مفادات کوشامل کیا گیا ہو۔ اصول اور سلوک کی شکل میں اس بات کی ضرورت محسوس کی گئی کہ امریکہ کا

Read more
Page 254 of 318« First...102030...252253254255256...260270280...Last »