ریزرویشن اور مسلمان

کمل دیوبندی
اردو کی مشہور شاعرہ انجم رہبر نے ایک بار کہا تھا ؎
اس طرح تو حق اپنا ملنے سے رہا انجم
چہرہ بھی سوالی ہے لہجہ بھی سوالی ہے
نہ جانے انجم رہبر نے یہ خوبصورت شعر کس زمین اور کن حالات میں کہا تھا، مگرآزادی کی طویل مدّت کے بعد آج یہ ش

Read more

مساوات پر مبنی سماج کے لئے جامع جمہوریت ضروری

دور حاضر میں ملک کی توجہ سماج کے کچھ طبقوں کے درمیان موجود نا برابری اور ان کے غصے کو کم کرنے کی طرف ہونی چاہیے۔ ہندوستان ایک جمہوری ملک ہے، لیکن یہاں جمہوریت کا مطلب صرف ہر پانچ سال کے بعد ہونے والا انتخاب رہ گیا ہے، جس میں رائے دہندگان حص

Read more

یو پی الیکشن سے پہلے نوئیڈا کے جھگی والوں کو بے گھر ہونا پڑے گا

سلمان عبد الصمد
عالم جمہوریت کا سب سے معروف تہوار ہوتا ہے اضلیکشن۔ اعلیٰ عہدیداروں کو بھی ادنیٰ باشندہ کے ساتھ مل کر بڑے تزک واحتشام سے اسے منا نا چاہیے ۔ مگر زمانہ ٔالیکشن کے قریب آتے ہی دھماچوکڑی اورہڑ بونگ کا عجیب وغریب ماحول ہو جاتا ہے، فضا مکدر ہونے لگتی ہے ۔ علی العموم دوطرح کے نظارے آمد الیکشن سے مربوط ہوتے ہیں ۔اولاً ارباب ِ سیاست کی بند تجوریا ں کھلنے لگتی ہیں، وہ پانچ سالہ خواب ِ خرگوش سے بیدار ہوجاتے ہیں ۔ ووٹروں کو لبھانے کے لیے نوازشوں و عنایتوں کی بارش ہونے لگتی ہے ۔ دلنو

Read more

آزادیء ہند میں علمائے کرام کا قائدانہ کردار

محمد احمد اللہ کلیم
انقلاب ہند میں ’’ آزادئ ہند‘‘ کو عظیم انقلاب کا درجہ دیا جاتا ہے۔ یوں تو ہندوستان کا ہرفرد اپنے ملک کو انگریزی پنجہ سے چھڑانے کی تگ و دو میں لگا ہوا تھا، لیکن علمائے کرام کو پہلے ہی اندازہ ہوگیا تھا کہ انگریزوں کا مقصد صرف سلطنت ہند پر اپنا پرچم لہرانا نہیں ہے، بلکہ حکومت ِ ہند کے خاتمہ کے ساتھ دین اسلام کو بھی نیست و نابود کرنا ہے ۔علمائے کرام اگر چہ مدارس اسلامیہ میں دینی، تعلیمی، تبلیغی اور اصلاحی خدمات میں مصروف تھے تاہم جب انگریزوں نے ہندوستان کو اپنے پنجۂ استبداد میں کس لیا اور یہاں کے باشندگان پر ہر طرح کے ظلم و جور کی اذیت ناک داستان لکھنی شروع کی تو علمائے کرام اپنے آپ کو مدارس کی چہار دیواریوں میں محدود نہ ر

Read more

شدت پسندی کے خطرے اور اعتدال پسند سرکار

میگھناد دیسائی
ناروے میں اینڈرس بیہرنگ بریوک نے جو کیا، ویسا پہلے بھی کئی مرتبہ ہوچکا ہے۔ یہ کوئی پہلا حادثہ نہیں ہے۔50 سال پہلے اس طرح کے جنونی لوگ، جنوبی وِنگ یہودیوں اور مارکسوادیوں کو بدنام کیا کرتے تھے اور اب یہ مسلمانوں اور مارکسوادیوں کو بد نام کر رہے ہیں۔شدت پسندوں کی طرح اسامہ بن لادن ان سبھی لوگوں سے نفرت کرتا تھا جو سنی نہیں ہوتے تھے۔ اسی طرح سے بریوک بھی پوری طرح سے ایک گوری یوروپی تہذیب چاہتا تھا اور اسامہ بھی ایسی ہی دنیا کی تمنا رکھتا تھا جو شدت پسندوں کے لیے قابل قبول ہو۔ایسے لوگ اپنے تنگ نظریے کی وجہ سے اس میں کسی بھی طرح کاکوئی معمولی سا فرق بھی برداشت نہیں کر سکتے۔ کسی بھی جدید اعتدال

Read more

جنگ آزادی کا ایک گمنام ورق’’چپاتی‘ ‘کی کہانی

حکیم حامد تحسین
یہ کہانی 1857ء کی جنگ آزادی کی تاریخ میں درج اس چپاتی کی ہے جو اس دانہ گندم سے بنتی ہے جس کے کھانے کی پاداش میں حضرت آدم علیہ السلام کو جنت چھوڑنی پڑی تھی۔ انگریزوں کی ناپاک اور ظالمانہ سیاست کی تاریخ کے صفحات پر تو یہ ایک پر اسررا کہانی کے طور پر درج ہے جس سے پردہ اٹھانے میں انگریزوں کو منہ کی کھانی پڑی۔ وہ ایڑی چوٹی کا زور لگانے کے بعد بھی اس راز سے پردہ اٹھانے میں ناکام رہے ،جیسے امریکہ کروڑوں ڈالر خرچ کرنے اور 5000 جاسوسوں کی کوشش کے بعد بھی اسامہ بن لادن کو کھوجنے میں ناکام رہا۔ بیشک انگریزوں کے لیے یہ ایک پر اسرار کہانی ہے، لیکن حقیقت یہ ہے کہ چپاتی کی کہانی ہندوستان کی جن

Read more

منموہن سنگھ صدر اور راہل گاندھی وزیراعظم بنیں گے

سنتوش بھارتیہ
ہندوستان کے ایک طاقتور وزیر نے سی بی آئی کے ڈائریکٹر کو ملنے کے لیے بلایا۔ جب وہ ملنے آئے تو اس وزیر نے چائے منگوائی۔ جب چائے کا پہلا گھونٹ وزیر اور سی بی آئی ڈائریکٹر نے لے لیا تو وزیر نے کچھ کہنا چاہا۔ سی بی آئی ڈائریکٹر نے انہیں روکتے ہوئے بڑے ادب سے کہا کہ وزیر صاحب، آپ نے بلایا، میں پروٹوکول کے تحت آپ سے ملنے چلا آیا۔ پروٹوکول کہتا ہے کہ جب بھی کوئی مرکزی وزیر بلائے، مجھے جانا چاہیے۔ لیکن اب جو بھی آپ مجھے کہیں گے یا حکم دیں گ

Read more

فاربس گنج پولس فائرنگ نیشن کمار حکومت پر ایک کلنک

عابد انور
ہندوستان میں مسلمانوںکا خون اس قدر ارزاں ہے کہ کوئی بھی اورکسی بھی وقت ان کا قتل کرسکتا ہے اور قاتل کا کوئی کچھ نہیں بگاڑ سکتا ہے۔ سوائے معدودے چند واقعات کے جس میں کچھ پرمقدمہ چلا ہے لیکن نتائج کا اب بھی انتظار ہے۔ ہمارے پاس مسلمانوں کے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں کی ایک طویل فہرست ہے جس میں مسلمانوں کے ساتھ ظلم برپا کرنے والے اونچے عہدے پر پہنچے، کانسٹبل انسپکٹر بن گیا ہے اور انسپکٹر ڈی ایس پی اور ایس پی یا پولیس کمشنر ڈائرکٹر جنرل پولیس کے عہدے سے ریٹائر ہوا ۔ یہ انعامات انہیں مسلمانوں کے قتل عام کرانے کے عوض دئے گئے تھے۔ مثال کی کوئی کمی نہیں میرٹھ ملیانہ کے فسادات کو پچی

Read more

بدعنوان نظام کو اڑا لے جائے گی انا کی آندھی

ڈاکٹر منیش کمار
ملک بھر میں انا ہزار ے کی جے جے کار ، بدعنوانی کے خلاف تحریک کی گونج،شہری نوجوانوں کا سڑکوں پر اترنا، کینڈل مارچ کرنا،یہ تمام باتیںایک نئی سیاست کے آغاز کا اشارہ ہیں۔ ہندوستان کی سیاست ایک ایسے موڑ پر کھڑی ہے جس نے بر سر اقتدار پارٹی اور اپوزیشن کے معنی ہی بدل دئے ہیں۔ کانگریس پارٹی، بی جے پی اور دیگر سیاسی جماعتوںکے ساتھ نوکر شاہی ہے اور اس کی مخالفت میں ملک کے عوام کھڑے ہیں۔مطلب یہ ہے کہ ایک جانب ملک چلانے والے لوگ ہیں اور دوسری جانب ملک کے عوام ہیں۔ آج دونوں ایک دوسرے کی مخالفت میں کھڑے نظر آ رہے ہیں۔ملک چلانے والوں نے سرکاری مشینری کو اتنا مضر بنا دیا ہے کہ لوگوں کا اعتماد منتشر ہونے لگا ہے۔سیاسی جماعتوں کی ساکھ دائو پر ہے۔ ایک

Read more